الیکشن کمیشن نے عام انتخابات2018 کی جائزہ رپورٹ پیش کر دی

اسلام آباد (فوزیہ چودھری) الیکشن کمیشن کی جانب سے عام انتخابات دو ہزار اٹھارہ کی جائزہ رپورٹ پیش کر دی گئی ہے۔ سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب کا کہنا ہے کہ یہ الیکشن پچھلے برس سے بہتر ہوئے۔ بیلٹ پیپرز پر انتخابات میں کوئی تنازع نہیں ہوا۔

سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب نے عام انتخابات دو ہزار اٹھارہ کی جائزہ رپورٹ سے متعلق کہا ہے کہ عام انتخابات سے متعلق پہلی مرتبہ جائزہ رپورٹ پیش کی گئی۔ جو قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلیوں کو بھیج دی گئی۔ اسمبلیاں دو ماہ بعد رپورٹ ٹیبل کر دیں گی۔

ڈی جی لاء الیکشن کمیشن محمد ارشد نے رپورٹ سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ الیکشن اصلاحات ایکٹ دو ہزار سترہ کے تحت پہلا الیکشن ہوا۔ پہلے الیکشن کمیشن تکنیکی بنیاد پر الیکشن پٹیشن خارج بھی کر سکتا تھا۔ اب الیکشن پٹیشن پر کارروائی کا مکمل اختیار صرف ٹربیونل کے پاس ہے۔ دیر میں خواتین ووٹرز کو ووٹ سے روکنے اور کم ٹرن آؤٹ پر الیکشن منسوخ کر دیئے گئے تھے۔

سینیٹ اور صدارتی انتخابات بھی الیکشن کمیشن کی رپورٹ کا حصہ ہیں۔ بلدیاتی اور ضمنی انتخابات کو بھی رپورٹ کا حصہ بنایا گیا۔ پوسٹ الیکشن ریویو بھی رپورٹ میں شامل ہیں۔

احمد علی کیف  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں