کراچی میں تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری، سٹالوں کا سامان ضبط، ہوٹل توڑ دیئے گئے

کراچی (تنویر منیر)  شہر قائد میں تجاوزات کا خاتمہ انتظامیہ نے کمر کس لی۔ شہر بھر میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کا آغاز کر دیا گیا۔ رفاہی پلاٹوں اور نالوں پر قائم تجاوزات کے خلاف کورنگی میں دوسرے روز بھی آپریشن کر کے متعدد دکانیں مسمار کر دی گئیں۔

تجاوزات کے خلاف آپریشن کیے دوران گلشن اقبال میں ہوٹلوں اور مکانات کے باہر قائم تجاوزات کا صفایا کر دیا گیا۔ ایمپریس مارکیٹ میں بھی کریک ڈاؤن کے دوران ڈرائی فروٹ کے اسٹال لگانے والوں کا سامان ضبط کر لیا گیا۔

شہر کراچی کا حسن واپسی لوٹنے لگا۔ شہر بھر میں کے ایم سی، کے ڈی اے، ضلعی انتظامیہ کی جانب سے تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری ہے۔ رفاہی پلاٹوں اور نالوں پر قائم تجاوزات کے خلاف کورنگی میں دوسرے روز بھی آپریشن جاری رہا۔ نالوں پر قائم 150سے زائد دکانوں کو مسمار کرنے کا سلسلہ جاری رہا۔ آپریشن کے دوران پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری تعینات رہی۔

آپریشن کے دوران علاقہ مکین سراپا احتجاج نظر آئے۔ دکانوں پر قائم مکانات مسمار کیے جانے کے خلاف نعرے بازی کی گئی۔ جس دوران ایک خاتون بے ہوش جس پر لیڈی پولیس اہلکار کو طلب کر لیا گیا۔

گلشن اقبال میں بھی  اینٹی انکروچمنٹ کے خلاف کارروائی کی گئی۔ متعدد دکانیں اور ہوٹلوں کے باہر قائم تجاوزات کا صفایا کر دیا گیا۔ دکاندار کا آپریشن کے خلاف شدید ردعمل دیکھنے میں آیا۔ ان کا کہنا تھا کہ کے ایم سی والوں نے لاکھوں روپے کا ٹیکس لے رکھا ہے۔ آپریشن کرنا سراسر زیادتی ہے۔

ڈسٹرکٹ ساؤتھ ایمپریس مارکیٹ کے اطراف ڈرائی فروٹ کے اسٹال لگانے والوں کے خلاف بھی کریک ڈاؤن کیا گیا۔ تمام سامان ضبط کرلیا گیا۔ صدر میں دوبارہ تعمیر کی جانے والی  تین وال فکسینگ دوکانیں بھی مسمار کردیں گئیں۔

دوسری جانب  ڈسٹرکٹ سنٹرل گلبرگ یوسف پلازہ بلاک 16 موسیٰ کالونی میں تجاوزات کے خلاف کارروائی کے دوران چبوترے، دیواریں فٹ پاتھ پر بنی  دوکانیں مسمار کر دی گئیں۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں