میگا منی لانڈرنگ کیس: آصف زرداری کو نوٹس جاری، اومنی گروپ کی جائیدادیں منجمد کرنے کا حکم

لاہور (پبلک نیوز) میگا منی لانڈرنگ کیس میں جے آئی ٹی نے اپنی رپورٹ میں زرداری اور اومنی گروپ کو جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے فوائد حاصل کرنے کا ذمہ دار قرار دے دیا جس پر عدالت نے اومنی گروپ کی جائیدادوں کو منجمد کرنے کے احکامات جاری کردیے۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کی سماعت کی۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں جعلی بینک اکائونٹس کیس کی سماعت ہوئی۔ عدالت میں جے آئی ٹی رپورٹ پیش کی گئی۔ چیف جسٹس پاکستان کے حکم پر جے آئی ٹی رپورٹ پروجیکٹر پر چلائی  گئی۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ عدالت نے بحریہ کا نام استعمال کرنے سے روکا تھا۔ جے آئی ٹی رپورٹ کے مطابق کلفٹن میں آئیکون ٹاور بنایا گیا ہے۔ آئیکون ٹاور میں آصف زرداری کا فرنٹ مین ڈنشا 50 فیصد شیئرز کا مالک ہے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ عدالت پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی جارہی ہے۔ جے آئی ٹی نے بتایا کہ آصف زرداری کے کپڑوں کے ڈارئی کلین کے پیسے بھی اومنی گروپ ادا کرتا رہا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ یہ قوم کا پیسہ ہے کسی کو بھاگنے نہیں دیں گے۔

وکیل زرداری نے بتایا کہ جے آئی ٹی نے عدالت کو شواہد نہیں بتائے۔ چیف جسٹس نے ریماکس دیئے کہ آپ ٹینشن نہ لیں جو فیصلہ کریں گے قانون کے مطابق ہوگا۔ ہمیں پتہ ہے قوم کا پیسہ کیسے لوٹا گیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ایان علی کہاں ہیں؟ وکیل فاروق ایچ نائیک نے جواب دیا کہ ایان علی بیمار ہیں۔ بیرون ملک ہیں، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ جوان بچی اتنی بیمار کیسے ہو گئی؟

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اومنی گروپ کے مالکان کا غرور ختم نہیں ہوا، اربوں روپے کے کهانچے ہیں، معاف نہیں کریں گے۔ انور مجید کے ساتھ اب کوئی رحم نہیں۔ عدالت نے اومنی گروپ، زرداری گروپ اور بحریہ ٹاؤن گروپ کی جے آئی ٹی میں ذکر کردہ تمام جائیدادوں کی خرید و فروخت پر پابندی عائد کردی اور کیس کی سماعت ملتوی کردی۔

حارث افضل  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں