جعلی اکاؤنٹس کیس: آصف زرداری اور فریال تالپور احتساب عدالت پیش

اسلام آباد (پبلک نیوز) جعلی اکائونٹس کیس میں آصف علی زرداری اور فریال تالپور آج بھی عدالت میں حاضر ہوئے۔ دو ملزموں کی غیرحاضری پر عدالت برہم، پتہ چلا کہ ایک ملزم تو انتقال کر چکا ہے۔ عدالت نے ملزم عدنان جاوید کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کر دیے۔ آئندہ سماعت پر گرفتار کر کے پیش کرنے کا حکم جاری کر دیا۔

 

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے جعلی بینک اکائونٹس کیس کی سماعت کی۔ سابق صدر آصف علی زرداری، فریال تالپور، زین ملک، عدیل شاہ، کرسٹوفر سمیت بیس سے زیادہ ملزم حاضر ہوئے۔ نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو آگاہ کیا کہ پانچ ملزم جیل میں ہیں اور سات جوڈیشل ریمانڈ پر ہیں۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر تمام ملزموں کی حاضری یقینی بنانے کا حکم دے دیا۔ عدالت کو تفتیشی افسر نے بتایا کہ ان کی اطلاع کے مطابق ملزم اقبال آرائیں وفات پا چکے ہیں۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر ملزم کا ڈیتھ سرٹیفیکیٹ بھی طلب کر لیا۔

عدالت نے چیف سیکرٹری سندھ کے ذریعے ملزموں کو طلب کر لیا۔ جج ارشد ملک نے ریمارکس دئیے کہ آئندہ سماعت پر ملزموں کو پیش نہ کیا گیا تو سندھ حکومت کو شوکاز نوٹس دیا جائے گا۔

جج ارشد ملک نے نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی سے استفسار کیا کہ نورین اور کرن کی وعدہ معاف گواہ بننے کی درخواست کا کیا ہوا؟ نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو آگاہ کیا کہ درخواستوں پر ابھی کام مکمل نہیں ہوا۔ ان کی درخواست چئیرمین نیب کو پہنچا دی گئی ہیں۔ ان پر کارروائی جاری ہے۔

کمرہ عدالت ملزمان وکلا اور میڈیا نمائندگان سے کھچا کھچھبھرا رہا جس کے باعث ملزمان کی حاضری لگانے میں مشکلات کا سامنا رہا۔ جس پر جج ارشد ملک نے ریمارکس میں کہا کہ جن کے لیے سارا میلہ لگا ہے ان کے لیے عدالت میں جگہ ہی نہیں ہے۔ عدالت نے ملزم شہزاد علی اور زین ملک کی حاضری یقینی بنانے کے لیے ضمانتی مچلکے داخل کرانے کی درخواست منظور کر لی۔ عدالت نے ملزموں کو بیس بیس لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کر دی۔

 

دوران سماعت تفتیشی افسر محمد علی ابرو نے عدالت نے استدعا کہ کہ مقدمے کی پیپر بک ابھی تیار نہیں ہے۔ کچھ وقت دیا جائے۔ ریکارڈ لایا ہوں۔ پیپر بک تیار کر لوں گا۔ جس کے بعد سماعت 29 اپریل تک ملتوی کر دی گئی۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں