فریال تالپور اور دیگر پیپلز پارٹی رہنماؤں  کیلئے اقامہ رکھنا مصیبت بن گیا

کراچی (پبلک نیوز) سندھ ہائیکورٹ میں پیپلز پارٹی رہنما فریال تالپور، منظور وسان، سہیل انور سیال اور دیگر کے خلاف اقامہ رکھنے کا معاملہ پر عدالت نے درخواست گزار کے وکیل کو دستاویزات جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ نے پیپلز پارٹی رہنما فریال تالپور، منظور وسان، سہیل انور سیال اور دیگر کے خلاف اقامہ رکھنے کے معاملہ پر درخواست گزار کے وکیل کو دستاویزات جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

فریال تالپور کے خلاف درخواست گزار فنگشنل لیگ کے معظم عباس کے وکیل خواجہ شمس اسلام نے دلائل دئیے کہ نواز شریف کی نااہلی میں اقامہ نے بنیادی کردار ادا کیا۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ فریال تالپور پر بھی لاگو ہوتا ہے۔ فریال تالپور نے اثاثے کیسے بنائے، تحقیقات کی ضرورت ہے۔

عدالت نے کہا کہ فریال تالپور کے وکیل فاروق ایچ نائیک کہاں ہیں۔ جونیئر وکیل نے مؤقف پیش کیا کہ فاروق ایچ نائیک اسلام آباد میں مصروف ہیں،عدالت نے ریمارکس دئیے فاروق ایچ نائیک سے کہیں آئندہ سماعت پر دلائل دیں۔

خواجہ شمس الاسلام کے دلائل مکمل۔ عدالت نے درخواست گزار کے وکیل کو بھی دستاویزات جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 15 فروری تک ملتوی کر دی۔

احمد علی کیف  5 ماه پہلے

متعلقہ خبریں