ہلاک ہونے والی بچی نشوا کے والد قیصرعلی کا انکوائری کمیشن بنانے کا مطالبہ

کراچی(تنویر منیر) کل شام تک اگر دارالصحت ہسپتال مالکان اورانظامیہ کو گرفتار نہیں کیا گیا تو اتور کو احتجاج کیا جائے گا، کراچی میں دارالصحت اسپتال کی بدانتظامی سے جاں بحق ہونے والی نشوا کے والد قیصرعلی نے معاملے پرانکوائری کمیشن بنانے کا مطالبہ کر دیا۔

 

کراچی پریس کلب میں گفتگو کرتے ہوئے نشوا کے والد قیصر علی نے کہا کہ معاملے پر سست روی دیکھ کر لگتا ہے کہ اداروں پر گرفتاریوں کے حوالے سے دباؤ ہے، ہمارے 3 مطالبات میں سے صرف ایک پر ہی عملدرآمد کیا گیا۔ وزیراعلیٰ سندھ اور آئی جی سندھ نے ملاقات میں تمام مطالبات کو پورا کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی۔

متعلقہ خبر:کراچی:غلط انجکشن لگنے سے مفلوج ہونے والی9ماہ کی بچی نشوا انتقال کر گئی

والد قیصر علی نے کہا کہ ہمارے 2 مطالبات ہیں، جن میں پہلا مطالبہ دارالحصت ہسپتال کے مالکان اور انتظامیہ کی گرفتاری ہے جبکہ دوسرا مطالبہ ہسپتال کے خلاف انکوائری کمیشن کی تشکیل کا ہے۔ قیصر علی نے بتایا کہ دارالحصت اسپتال میں بچوں کے لیے الگ ایمرجنسی ہی موجود نہیں، اس بات کو ہسپتال کی جانب سے چھپایا گیا اور نشوا کی حالت بگڑنے پر دوسرے اسپتال منتقل کرنے سے روکا گیا۔ عدالت میں نشوا کی موت کے مقدمے کو غفلت کی بجائے 302 کے مقدمے کی درخواست دائر کی گئی ہے۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں