مذہبی سکالروں نے ویڈیو گیم کیخلاف فتویٰ جاری کر دیا

پبلک نیوز: کردستان میں مذہبی سکالروں نے مشہور ویڈیو گیم 'پلیئر ان نونز بیٹل گراؤنڈ' کے خلاف فتویٰ جاری کر دیا ہے۔

یونین آف اسلامک سکالرز ایک ایسا گروپ ہے جو عراقی کردستان میں اسلامی بنیادوں پر فتوے دیتا ہے تاہم کچھ امام اس پابندی کے خلاف ہیں۔ 'پلیئر ان نونز بیٹل گراؤنڈ' پوری دنیا میں مقبول ایک ویڈیو گیم ہے۔

کردستان یونین آف سکالرز کا کہنا ہے کہ یہ گیم بنیادی طور پر وقت کا ضیاء ہے۔ یہ گیم جب موبائل فونز پر کھیلی جائے گی تو اس سے بینائی پر بہت اثر پڑے گا، اس سے جسم پر بھی برا اثر پڑے گا۔

ایک خاتون کا کہنا ہے کہ 'اب میرے پاس صرت طلاق ہی واحد راستہ رہ گیا ہے، وہ کس طرح کی شادی ہے جس میں شوہر کا دہیان اتنا بٹا رہتا ہے۔'

عوام کا کہنا تھا ک اب صرف یہ گیم ہی بچی تھی اور اس پر بھی پابندی لگا دی گئی ہے۔ ہمارے میں نوجوان پریشان ہیں۔ آپ بتاتے ہیں کہ دنیا کی بہت سی چیزیں حرام ہیں، بالوں کے سٹائل بنانا کئی طرح کی داڑھی رکھنا بھی حرام سمجھا جاتا ہے۔عوام کا مطالبہ ہے کہ آپ نوجوانوں کو چھوڑ کیوں نہیں دیتے۔

حارث افضل  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں