شہبازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کرینگے: وزیراطلاعات

اسلام آباد (پبلک نیوز) وفاقی حکومت نے شہبازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

 

وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ میں وزیراطلاعات فواد چودھری کا کہنا تھا کہ کرتارپور راہداری نومبر میں کھلے گی۔ کابینہ اجلاس میں نئی سول ایوی ایشن اتھارٹی پالیسی کی منظوری دی گئی ہے۔ نئی سول ایوی ایشن پالیسی کا مقصد ہوابازی کی صنعتوں کی بحالی ہے۔ پالیسی میں 18 برس پرانے جہاز برآمد کرنے کی اجازت دی گئی۔ خواتین پائلٹس کی حوصلہ افزائی کی گئی۔ پائلٹ کے لائسنس کی مدت بڑھا کر 5 سال کر دی گئی ہے۔

 

وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی سی ڈی اے اور ایل ڈی اے کو شہر نہ پھیلانے کی ہدایت کی ہے۔ اسلام آباد میں بلند عمارتوں کی تعمیر پر پابندی ختم کر دی گئی۔ وزیراعظم سیاحت کے فروغ پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں۔ 170 ممالک کو ای ویزا کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ غیر ملکیوں کے لیے پاکستان کے اندر این او سی کی ضرورت نہیں ہوگی۔ برطانیہ، ترکی، یو اے ای، سعودی عرب کو ای ممالک کی لسٹ میں شامل کیا ہے۔

فواد چودھری کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نے نوازشریف کو 6 ہفتوں کی ضمانت پر رہا کیا۔ نوازشریف کو مشورہ ہے کہ عوام کا پیسہ واپس کر دیں۔ نواز شریف کا سارا کچا چھٹا عدالت میں کھل گیا۔ ایسا نہیں ہو سکتا نواز شریف پیسے واپس نہ کریں اور باہر چلے جائیں۔ شہباز شریف سے متعلق عدالتی فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو نے ٹرین مارچ کے لیے 300 ٹکٹیں خریدیں۔ انہیں اتنے لوگ بھی مل گئے، بلاول نے پہلی بار پیسے دے کر 11 لاکھ روپے ٹکٹ کے ادا کیے، ان کی کی سرگرمی کا اچھا پہلو یہ ہے کہ انہیں پہلی بار ٹکٹ کے پیسے دینا پڑے۔

حارث افضل  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں