پاکستان کے موجودہ حالات کے ذمے دار پر مقدمہ چلنا چاہیے، وزیراطلاعات

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیراطلاعات فواد چودھری نے کہا ہے کہ پی آئی اے کا قرضہ 406ارب روپے ہے اور ماہانہ 2ارب روپے کا نقصان کر رہی ہے۔ ریمانڈ کے دوران پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہو سکتے لیکن اسپیکر نے پھر بھی شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر جاری کیے۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیراطلاعات فواد چودھری کا کہنا تھا کہ ہم پاکستان میں اپنا گھر کھڑا کرنے کی کوشش کر رہے۔ ہماری کوشش ہے کہ ڈاکوؤں سے پیسہ نکلوائیں۔ اپوزیشن ہماری کوشش کے خلاف احتجاج کر رہی ہے۔ احتجاج کرنے والی اپوزیشن کو میڈیا کے سامنے آنا چاہئے۔ اپوزیشن شور کے بجائے الزامات کا جواب دے۔ تنقید کرنے والی اپوزیشن کی جرات پر حیران ہوں۔ اسپیکر نے اپوزیشن لیڈر کے پروٹیکشن آرڈر جاری کر دیئے ہیں۔

قرضہ لے کر گھر بنانے کا رواج دوسرے ملکو ں میں عام ہے۔ امریکہ میں 75فیصد گھر قرض لے کر بنائے جاتے ہیں۔ گھر بنانے کے لیے سرکاری زمین بطوزر ضمانت استعمال ہو گی۔ نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم مکمل طور پر محفوظ اسکیم ہے۔ حکومت پیسہ نہیں لگا رہی، نجی سیکٹر سرمایہ لگائیں گے۔ چین کی سرمایہ کاری بڑھے گی، رابطے مضبوط ہوں گے۔ غریب عوام کو ریلیف دینے کے لیے ہیلتھ  کارڈ کا اجرا کیا جا رہا ہے۔

نیب کی کارکردگی کو بھی بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ سرکار کی زمین پر بنک لوگوں کو قرضہ دے گا۔ رواں سال کے آخر تک غیرقانونی موبائل فون کام نہیں کر سکیں گے۔ عون عباس کوبیت المال کا ایم ڈی مقرر کیا گیا ہے۔ سگریٹ مافیا کے خلاف بڑے کریک ڈاؤن کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سگریٹ پر ٹیکس نہ دینے والی کمپنیوں کے خلاف کریک ڈاؤن ہوگا۔

پی آئی اے کا قرضہ 406ارب روپے ہے اور ماہانہ 2ارب روپے کا نقصان کر رہی ہے۔ سابقہ ادوار میں پاکستان کو ڈاکوؤں کی طرح لوٹا گیا۔ نواز شریف اور آصف زرداری نے ملک میں پیسہ چھوڑا ہی نہیں۔ لوٹا ہوا ملک کا پیسہ واپس لانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ریمانڈ کے دوران پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہو سکتے لیکن اسپیکر نے پھر بھی شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر جاری کیے۔

حارث افضل  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں