'سوشل میڈیا پر اگلے ہفتے سے سخت کریک ڈاؤن شروع ہوگا'

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیر اطلاعات چودھری فواد حسین نے کہا ہے کہ بھارت میں مودی حکومت آنے کے بعد انتہا پسندی میں اضافہ ہوا۔ دنیا کے مختلف معاشرے کسی نہ کسی صورت میں انتہا پسندی کا شکار ہیں۔ اسلامی تعلیمات کی ترویج تلوار سے نہیں بزرگان دین سے ہوئی۔

 

وزیر اطلاعات چودھری فواد حسین کا اسلام آباد میں ورکشاپ سے خطاب میں کہنا تھا کہ دنیا کو انتہا پسندی جیسے سنگین چیلنج کا سامنا ہے۔ پاکستان کو بھی دہشتگردی اور انتہاپسندی کا سامنا ہے۔ بھارت میں مودی حکومت آنے کے بعد انتہا پسندی میں اضافہ ہوا۔ دنیا کے مختلف معاشرے کسی نہ کسی صورت میں انتہا پسندی کا شکار ہیں۔ اسلامی تعلیمات کی ترویج تلوار سے نہیں بزرگان دین سے ہوئی۔

 

فواد چودھری کا کہنا تھا کہ اسلام میں انتہا پسندی اور شدت پسندی کا کوئی تصور نہیں ہے۔ افغان تنازع میں پھنسنے سے پاکستان میں انتہا پسندی پھیلی۔ غیر متعلقہ تنازع میں پھنسنے سے شکوک و شبہات جنم لیتے ہیں۔ پاکستان انتہا پسندی اور دہشت گردی کے دور سے کامیابی سے نکلا۔ ہماری برداشت اور حوصلے کی تاریخ بہت پرانی ہے۔ پاکستان نے دہشتگردی کے خلاف لازوال قربانیاں دی ہیں۔

 

 

ان کا کہنا تھا کہ کسی کو نفرت کا پرچار کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ انتہا پسندی سے دہشت گردی کا بیج بویا جاتا ہے۔ عمران خان کی حکومت میں پہلے روز سے ہی قانون کی عملداری کا عزم کیا۔ مکالمے اور مباحثے سے مسائل کا حل ممکن ہو جاتا ہے۔ کسی پر اپنی رائے مسلط کرنے سے مسائل جنم لیتے ہیں۔ ملک میں اظہار رائے کی آزادی لیکن دوسروں کی آزادی سلب نہیں کی جا سکتی۔

 

ان کا مزید کہنا تھا کہ قوانین پر عملدرآمد ریاست کی ذمہ داری ہے۔ میڈیا پر نفرت انگیز تقاریر پر کافی حد تک قابو پالیا ہے۔ سوشل میڈیا پر نفرت انگیز مواد روکنے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔ سوشل میڈیا کا غلط استعمال کرنے والوں کی گرفتاریاں کی گئی ہیں۔ انتہا پسندی کے خلاف قومی اور بین الاقوامی بیانیہ تشکیل دینا چاہتے ہیں۔

حارث افضل  6 روز پہلے

متعلقہ خبریں