کراچی سے 40 لاکھ ڈالر امریکہ منتقل کیے جانے کا انکشاف

کراچی (حمزہ گیلانی) ڈالر بیرون ملک منتقل کرنے والوں کے خلاف ایف بی آر سرگرم ہے۔ کراچی کی ایک فیملی کی جانب سے 40 لاکھ سے زائد ڈالر امریکہ منتقل کیے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ کراچی کسٹم کورٹ نے باپ، بیٹے، بیٹیوں کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے۔

ایف آئی آر کے مطابق ملزم پاکستان کے ساتھ امریکی شہریت بھی رکھتے ہیں۔ اب تک 40 لاکھ 94 ہزار 500 ڈالرز امریکا منتقل کر چکے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کسٹم کورٹ میں امریکی ڈالرز بیرون ملک منتقل کرنے والوں کے خلاف ایف بی آر سرگرم ہے۔ کراچی کی ایک فیملی کی جانب سے 40 لاکھ سے زائد امریکی ڈالرز امریکہ منتقل کیے جانے کا بڑا انکشاف سامنے آیا ہے۔

عدالت نے باپ، بیٹے اور بیٹیوں کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے۔ انٹیلی جنس اینڈ انوسٹی گیشن ان لینڈ ریونیو نے مقدمے کی نقول عدالت میں جمع کرادی۔

ملزمان میں باپ پرویز علی، بیٹیاں سارہ، انعم علی اور بیٹا جبران شامل ہیں۔ ایف آئی آر کے مطابق ملزمان پاکستان کے ساتھ امریکی شہریت بھی رکھتے ہیں۔ انھوں نے منی لانڈرنگ کے لیے 2016 میں متعدد اکاوئنٹس کھولے۔

ایف آئی آر کے مطابق ملزمان نے کراچی کی مختلف ایکسچینجز سے بھاری تعداد میں ڈالرز خریدے۔ ملزمان نے مختلف اکاؤنٹس کے ذریعہ ڈالرز امریکہ بھجوائے۔ ملزمان اب تک 40 لاکھ, 94 ہزار 500 ڈالرز امریکہ منتقل کر چکے۔

ملزم پرویز علی سے اثاثوں کے بارے میں پوچھا تو اطمینان بخش جواب نہ دے سکا۔ ایف آئی آر کے مطابق شبہ ہے کہ ملزمان نے منی لانڈرنگ کرکے غیر قانونی اثاثے بنائے۔ ملزمان نے 11 کروڑ روپے سے زائد کا ٹیکس چوری کیا۔

عدالت نے ملزمان کے 10،10 لاکھ کے عوض قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے۔ عدالت نے ایف بی آر حکام کو مزید تحقیقات کرنے کی ہدایت کر دی۔

احمد علی کیف  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں