پنجاب کے بڑے شہروں میں پانی کے حوالے سے خطرے کی گھنٹی بج گئی

پبلک نیوز: پانی کے ضیاع کی سزا یا ماحولیاتی تبدیلی، پنجاب کے بڑے شہر پیاسے ہونے لگے۔ زندگی کی علامت پانی پہنچ سے دور ہونے لگا۔ پانی کا استعمال ضرورت سمجھ کر، نہ سمجھے تو خشک سالی کی صورتحال پیدا ہو سکتی۔

ہاں جی! پنجاب کے بڑے شہر جلد پیاسے ہوں جائیں گے۔ پنجاب اسمبلی میں پیش کردہ رپورٹ میں ہوشربا انکشافات، ملتان، بہاولپور، لودھراں، وہاڑی، خانیوال، پاکپتن، بہاولنگر، قصور اور اوکاڑہ میں زیر زمین پانی کی سطح تیزی سے کم ہونے لگی۔

ان شہروں میں سالانہ 0.5 سے 3.0 فٹ پانی نیچے جارہا ہے۔ لاہور شہر میں سالانہ 2.5 فٹ اوسطا پانی نیچے جارہا ہے۔ صوبائی دارلحکومت لاہور میں زیر زمین پانی کا لیول تقریباً 135 فٹ تک ریکارڈ کیا گیا جو سب سے زیادہ ہے۔

اریگیشن ڈیپارٹمنٹ نے گراؤنڈ واٹر مینجمنٹ سیل قائم کر دیا۔ زیر زمین پانی کو ریگولٹ کرنے کے لیے واٹر ایکٹ 2019 تیار، فوری منظوری کی تجویز بھی دے دی گئی۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں