کابینہ نے نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مشروط اجازت دے دی

اسلام آباد (پبلک نیوز) وفاقی کابینہ نے نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مشروط اجازت دے دی۔ نوازشریف کو بیرون ملک اڑان بھرنے سے قبل ضمانت جمع کرانا ہو گی۔ کابینہ میں اکثریت نے نام ای سی ایل سے نکالنے کی حمایت کر دی۔

 

نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی کس نے حمایت کی اور کس نے کی مخالفت، پبلک نیوز نے پتہ لگا لیا۔ کابینہ اراکین میں نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے میں کون کون حمایت ہے۔ جاننے کے لیے ہاتھ کھڑے کرائے گئے۔ فیصل واوڈ، علی امین گنڈا پور، زلفی بخاری  اور فواد چودھری کے علاوہ تمام ارکین نے ہاتھ کھڑے کر کے نواز شریف کے حق میں ووٹ دیا۔

 

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نوازشریف نے صحت سے متعلق ماضی میں بہت غلط بیانی کی۔ نوازشریف اب اصل میں بیمار ہیں تو لوگ ماننے کو تیار نہیں، وزیراعظم نے کہا کہ نوازشریف اب واقعی ہی بیمار ہیں، فی الحال انہیں جانے دیں، انسانی ہمدردی کی بنیاد پر فیصلہ کر رہے ہیں، نوازشریف کو ان کی مرضی کا علاج کرانے دینا چاہیے۔

 

ذیلی کمیٹی ای سی ایل سے متعلق کردار ادا کرے، شہبازشریف سے مکمل ضمانت لے، کہا ڈیل کا تاثر درست نہیں، احتساب کا عمل جاری رہے گا۔ وزیراعظم نے کہا کہ نوازشریف قانونی تقاضے پورے کر کے باہر جائیں لیکن یہ یقینی بنایا جائے کہ وہ واپس آ کر ٹرائل کا سامنا کریں۔

 

ذرائع کے مطابق شیخ رشید، ندیم افضل چن اور دیگر بھی نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے حامی تھے۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں