حاجیوں کو سبسڈی نہیں ملے گی،وفاقی کابینہ نے حج پالیسی 2019ءکی منظوری دے دی

اسلام آباد(پبلک نیوز) اس سال حاجیوں کو کسی قسم کی کوئی سبسڈی نہیں ملے گی۔ وفاقی کابینہ نے حج پالیسی 2019 کی منظوری دے دی۔ حج درخواستیں 20 فروری سے وصول کی جائیں گی۔

 

حج مہنگا نہیں بہت مہنگا ہو گیا، فی حاجی اخراجات 4لاکھ 36ہزار سے 26ہزار تک ہوں گے، حکومت نے جہاز کے کرائے، ہوٹل کی رہائش سمیت تمام خرچے بڑھا دیئے، رہی سہی کسر سبسڈی نہ دے کر پوری کر دی، گذشتہ سال جو حج دو لاکھ 80ہزار سے 70ہزار کے درمیان ہوتا تھا وہ اب 4لاکھ 36ہزار میں ہو گا، لیکن وزیر اطلاعات فواد چودھری کا اسرار ہے کہ حج ویسے ہی ہو گا جیسا پہلے ہوتا تھا۔

متعلقہ خبر:وزارت مذہبی امور نے حج پالیسی 2019ء کو حتمی شکل دے دی

حج پالیسی 2019ء کی منظوری وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس میں وفاقی کابینہ نے دی۔ اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ وہ حج انتظامات کو خود مانیٹر کریں گے۔ حاجیوں کو دی جانے والی سہولیات پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا۔ وزیر اطلاعات کے مطابق رواں برس ایک لاکھ 84 ہزار پاکستانی حج کریں گے، حج کے لیے 10 ہزار سیٹیں بزرگوں کے لیے مختص کی گئی ہیں۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ سرکاری کوٹہ 60 فیصد اور نجی ٹورز آپریٹرز کا کوٹہ 40 فیصد رکھا گیا ہے۔ حج درخواستیں 20 فروری سے وصول کی جائیں گی۔ 80 سال یا زائد عمر کے افراد اور مسلسل تین سال سے ناکام رہنے والوں کے لئے اچھی خبر ہے۔ اس بار انہیں بغیر قرعہ اندازی حج پر بھجوایا جائے گا۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں