"عالمی ادارہ صحت، پاکستان کو پولیو و خسرہ اور دیگر امراض کے خاتمہ کیلئے تعاون فراہم کریگا"

اسلام آباد(پبلک نیوز) وفاقی وزیر صحت عامر محمود کیانی نے کہا کہ عالمی ادارہ صحت پاکستان کے ساتھ صحت کی یکساں سہولیات کی فراہمی، پولیو، خسرہ اور دیگر امراض کے خاتمہ کے لیے تعاون کرے گا۔ نرسنگ کے شعبہ کو مضبوط کرنے کے لیے مربوط حکمت عملی قائم کی جا رہی ہے۔

 

وفاقی وزیر صحت عامر محمود کیانی اور عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس کی مشترکہ پریس کانفرنس۔ وفاقی وزیر صحت نے کہا کہ عالمی ادارہ صحت کے سرابرہ ڈاکٹر ٹیڈروس کا پاکستان کا دورہ کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہیں۔ پاکستان میں لوگوں کی طبی نگہداشت کے حصول کو یقینی بنانے اور پولیو کے خاتمے کے لیے پر عزم۔

 

عامر محمود کیانی کا کہنا تھا کہ عالمی ادارہ صحت پاکستان کے ساتھ صحت کی یکساں سہولیات کی فراہمی، پولیو، خسرہ اور دیگر امراض کے خاتمہ کے لیے تعاون کرے گا۔ حکومت صحت کے شعبہ میں بڑے پیمانے پر اصلاحات لا رہی ہے۔ اپنے عوام کی صحت میں بہتری لانے کے لیے عالمی ادارہ صحت کے ساتھ مضبوط شراکت داری چاہتے ہیں۔ وزیراعظم کے وژن کے مطابق عوام کی صحت میں بہتری لانا موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

 

وفاقی وزیر صحت کا کہنا تھا کہ اسلام آباد کوصحت کی یکساں سہولیات کی فراہمی کے لیے ماڈل ہیلتھ کیر سسٹم بنایا جائے گا۔ نرسنگ کے شعبہ کو مضبوط کرنے کے لیے مربوط حکمت عملی قائم کی جا رہی ہے۔ حکومت پولیو کے خاتمے کے لیے پر عزم ہے۔ حکومت کے صحت اصلاحات کا مقصد کروڑوں عوام کی صحت میں بہتری لانا ہے۔ مشترکہ کوششوں سے جلد پاکستان کو پولیو سے پاک کر دیا جائے گا۔

 

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس نے اکتوبر 2018 میں خسرہ کی ویکسین لگائے جانے کی مہم کی بھر پور کامیابی کو بھی سراہا۔ ڈاکٹر ٹیڈروس نے پاکستان میں صحت کے نظام میں بہتری لانے کی حکومتی کاؤشوں کو سراہا۔ ڈاکٹر ٹیڈروس نے پولیو کے خاتمہ کے لیے اسلام آباد میں قائم ایمرجنسی آپریشنز سینٹر کا دورہ کیا۔

 

انہوں نے کہا کہ عالمی ادار(WHO) صحت وزیر اعظم کے قومی صحت پروگرام پر عملدرآمد کے لیے ہر ممکن تعاون کرے گا۔ ڈاکٹر ٹیڈروسڈ ڈی جی ڈبلیو ایچ او کا کہنا تھا کہ پولیو کے خاتمے کے لیے پاکستان کی کوششیں قابل ستائش ہیں۔ حکومت پاکستان کے صحت کے شعبے میں ترقی پسند ایجنڈے کی بھر پور حمایت کرتے ہیں۔

عطاء سبحانی  5 ماه پہلے

متعلقہ خبریں