موجودہ وفاقی حکومت فنانس بل آج قومی اسمبلی میں پیش کرے گی

اسلام آباد(پبلک نیوز) موجودہ حکومت فنانس بل آج قومی اسمبلی میں پیش کرے گی، اسٹاک مارکیٹ کیلئے ٹیکس مراعات، شیئرزکی خرید و فروخت پر ایڈوانس انکم ٹیکس کاخاتمہ بجٹ کا حصہ ہے۔ انسدادمنی لانڈرنگ کے حوالے سے اہم تجاویز بھی فنانس بل میں شامل ہیں۔

 

فنانس بل کل اور آج قومی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا۔ وزیر خزانہ اسد عمر نے بجٹ تقریر کا متن تیار کر لیا۔ وزیر خزانہ اسٹاک مارکیٹ کیلئے ٹیکس مراعات،شیئرز کی خرید و فروخت پر ایڈوانس انکم ٹیکس کے خاتمے کا اعلان کریں گے۔ منی لانڈرنگ روکنے کے حوالے سے اہم تجاویز نئے فنانس بل کاحصہ ہیں۔

 

حکومت نےانسدادمنی لانڈرنگ ترمیمی بل کو فنانس بل کا حصہ بنانے کی منظوری دیدی ہے۔ منی لانڈرنگ میں ملوث افراد، کمپنیوں کے خلاف سزا اورجرمانہ میں اضافے کی تجویز شامل ہے۔ رقوم کی غیر قانونی ترسیل میں ملوث افراد کو 3 سال سے 10 سال سزا دی جا سکے گی۔ترامیم ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان پرعمل درآمد کے تناظر میں کی جارہی ہیں۔ ایف آئی اے کا دائرہ اختیار فاٹا تک بڑھایا جائے گا۔

 

ایف آئی اے غیرملکی زرمبادلہ کی ترسیل روکے گی۔ ایف آئی اے ایکٹ میں پاک افغان تجارتی پالیسی میں مناسب ترمیم تجویز کی گئی ہیں۔ حکومتی ارکان نے آنے والے بجٹ کو عوام دوست قرار دے دیا ہے۔ تحریک انصاف نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس بھی کل اور آج بلا لیا، جو قومی اسمبلی کےاجلاس سےقبل ہو گا۔ ارکان کو منی بجٹ اور سیاسی معاملات پر بریفنگ دی جائے گی۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں