ہمارا افغانستان کے ساتھ ثقافتی، تہذبی اور تاریخی رشتہ ہے: فردوس عاشق

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) معاون خصوصی اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ افغان صدر کا اہم وقت پر پاکستان کا دورہ ہے۔ وزیراعظم عمران خان کا وژن ہے کہ خطے کے ممالک سے تعلقات بہتر بنائے جائیں۔ خطے کے ممالک کے ساتھ عوامی رابط اور تعاون کو بہتر بنایاجا رہا ہے۔ افغان صدر نے اعلیٰ سطح وفد کے ہمراہ پاکستان کے ساتھ مذاکرات کیے۔ پاکستان اور افغانستان قدرتی اتحادی ہیں۔

 

افغان صدر کے دورہ پاکستان اور ان کی وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فردوس عاشق کا کہنا تھا کہ ہمارا افغانستان کے ساتھ ثقافتی، تہذبی اور تاریخی رشتہ ہے۔ پاکستان نے 35لاکھ سے زائد افغان مہاجرین کی میزبانی کی۔ وقت آ گیا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کے تضادات کو حل کیا جائے۔

 

انھوں نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کو مل کر آگے بڑھنا ہے۔ افغان صدر کیساتھ بات چیت میں مختلف امور پر مثبت بات چیت ہوئی۔ افغان صدر کا دورہ مختلف معاملات کو آگے بڑھانے کا پیش خیمہ ثابت ہو گا۔ پاکستان اور افغانستان کے درمیان سمگلنگ سےمعیشت متاثر ہوتی ہے۔ مذاکرات میں پاکستان افغانستان باہمی تجارت پر بات ہوئی۔  

 

ان کا کہنا تھا کہ دونوں ملکوں کا مشترکہ ورکنگ گروپ بنا کر مسائل حل کیے جا سکتے ہیں۔ پاکستان بہت بڑی مقدار میں اشیاء افغانستان برآمد کرتا ہے۔ افغانستان کے ساتھ برآمدات کو 3ارب ڈالر تک پہنچانا چاہتے ہیں۔ افغانستان میں امن استحکام ہو گا تو باہمی تجارت کو فروغ حاصل ہو گا۔ افغان وزیر اطلاعات سے بھی ثقافت کے فروغ پر بات چیت ہوئی۔

 

فردوس عاشق نے کہا کہ افغانستان کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون کو فروغ دے رہے ہیں۔  پاکستان عمران خان کی قیادت میں دنیا کے لیے منسلک ہو رہا ہے۔ علاقائی تعاون کو فروغ دے کر دنیا کے ساتھ روابط آسان ہوں گے۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں