پیرس کے ساڑھے 800 سال قدیم گرجا گھر کو تباہی سے بچا لیا گیا

پبلک نیوز: پیرس کے ساڑھے 800 سال قدیم گرجا گھر کو مکمل تباہی سے بچا لیا گیا، تاہم تاریخی عمارت کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ چرچ میں آگ لگنے کی وجہ سے صدر میکرون کا خطاب بھی مؤخر کر دیا گیا۔ فرانسیسی صدر نے نوٹرڈیم چرچ کی تعمیرنو کا اعلان کیا ہے۔

 

ساڑھے 800 سال قدیم پیرس کے نوٹرڈیم چرچ میں لگی خطر ناک آگ کئی گھنٹے بعد بجھا دی گئی۔ فائر بریگیڈ حکام کا کہنا ہے کہ عمارت کے اصل ڈھانچے کو بچا کر چرچ کو مکمل تباہی سے بچا لیا  گیا ہے۔ آگ سے متاثر ہوکر چرچ کی چھت جل گئی۔ ایک بلند مینار گر گیا جبکہ اس کے دو مین ٹاور بچا لیے گئے ہیں۔ جبکہ اس عمل میں 400 فائر فائٹرز نے آگ بجھانے میں حصہ لیا۔

 

فرانسیسی صدر امینیویل میکرون  نے تاریخی گرجا گھر کو دوبارہ اصل حالت میں بحال کرنے اور تعمیر نو کا اعلان کیا ہے۔ آگ کی لپیٹ میں آیا چرچ گوتھک آرٹ کا شاہکار تھا۔ نوٹرڈیم چرچ کی تعمیر 1160 میں شروع ہوئی اور 1260 میں مکمل ہوئی۔ یہاں ہر سال ایک کروڑ 20 لاکھ سیاح شاہکار چرچ کو دیکھنے آتے ہیں۔ اس میں موجود مصوری کے فن پارے بھی تاریخی اہمیت کے حامل ہیں۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں