کشمیریوں کے قتل عام پر دنیا اتنی بے حس نہیں رہ سکتی: وزیر خارجہ

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے دنیا بھر میں پاکستانی سفارتخانوں کو ہدایات جاری کیں ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی بربریت کو اجاگر کریں۔

 

دفتر خارجہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کے مظالم انتہا تک پہنچ گئے ہیں۔ 300 سے زائد کشمیری زخمی ہیں، متعدد کی حالت تشویشناک ہے۔ کل پلوامہ میں جو قتل عام ہوا ہے اس نے سب کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا۔ کشمیریوں کو براہ راست گولیوں کا نشانہ بنایا گیا۔ کل بھارتی فورسز نے 14 کشمیریوں کو شہید کیا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ انڈونیشیا سے ایم بی اے کرنے والے 3 ماہ کی بچی کے باپ کو شہید کیا گیا۔ کل آٹھویں جماعت کے طالب علم کو شہید کیا گیا۔ بچی کو پیلٹ گن سے نشانہ بنایا گیا اور اس کی بینائی ضائع ہو گئی۔ بھارتی فورسز کے مظالم پر عالمی برادری کو نوٹس لینا چاہئے۔ عالمی برادری کشمیر میں ظلم ستم پر آنکھیں بند کیے ہوئے ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ برہان وانی کی شہادت کے بعد آزادی کی تحریک میں تیزی آئی۔ نومبر  میں 18 نہتے کشمیریوں کو شہید، 100 کو زخمی کیا گیا۔ اس سال 500 کشمیریوں کو شہید کیا گیا۔ اقوام متحدہ، او آئی سی کو خطوط لکھے ہے۔ خطوط میں کل ہونے والے واقعات اور پہلے کے مظالم سے آگاہ کیا ہے۔ پاکستان کی تمام سیاسی پارٹیاں کشمیر کے معاملے پرمتحد ہیں۔

وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ 5 فروری کو کشمیر کے حوالے سے لندن میں عالمی کانفرنس کی تجویز ہے، کشمیر ایشو پر تمام سیاسی جماعتیں ایک مؤقف رکھتی ہیں اور تمام جماعتیں سیاسی اختلافات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے کشمیر میں ظلم وستم کیخلاف نکلیں۔

ان کا کہنا تھا کہ 19 فروری کو برسلز میں یورپی یونین اور یورپین پارلیمنٹ کی مسئلہ کشمیر پر پبلک سماعت ہوگی، یورپین پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر پبلک سماعت کی حمایت بھی کریں گے اور حصہ بھی بنیں گے۔ کل قومی اسمبلی کے اجلاس میں کشمیر میں جاری بربریت کے خلاف متفقہ مذمتی قرارداد بھی آنی چاہیے۔

حارث افضل  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں