سابق وزیراعظم نواز شریف اڈیالہ سے لاہور کوٹ لکھپت جیل منتقل کر دیئے گئے

لاہور(پبلک نیوز) نیب کی ٹیم العزیزیہ کیس کے مجرم نوازشریف کو لیکرلاہور پہنچ گئی، نوازشریف کو رات اڈیالہ جیل میں گزارنے کے بعد لاہور کوٹ لکھپت میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ لیگی قائدین نے اڈیالہ جیل کے باہر نوازشریف کی سالگرہ کا کیک کاٹا۔

 

احتساب عدالت نے نوازشریف کو العزیزیہ ریفرنس میں سات سال قید اور بھاری جرمانے کی سزا سنائی، فیصلہ سننے کے بعد نواز شریف کی جانب سے استدعاکی گئی تھی کہ انہیں راولپنڈی کی جیل کی بجائے لاہور کی جیل میں منتقل کیا جائے جس پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کر دیا اور پھر کچھ دیر کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے نوازشریف کی اپیل منظور کر لی تھی۔

متعلقہ خبر:نواز شریف کو فلیگ شپ ریفرنس میں بری، العزیزیہ میں گرفتار کر لیا گیا

ذرائع کے مطابق فیصلے کے بعد نوازشریف کو اڈیالہ جیل منتقل کیا گیا، جہاں انہوں نے پہلی رات گزاری، دن کا آغاز فجر کی نماز ادا کر کے کیا۔ نوازشریف نے ناشتے میں چائے اور رس کھائے جس کے بعد ان کی لاہور راونگی کی تیاریا ں شروع کی گئیں۔ نوازشریف کو سخت سیکیورٹی میں نور خان ایئر بیس پر لایا گیا اور خصوصی طیارے سے لاہور پہنچایا گیا جہاں سے انہیں کورٹ لکھپت جیل منتقل کر دیا گیا۔

 

نوازشریف کو لاہور میں کوٹ لکھپت جیل منتقل کر دیا گیا ہے جہاں انہیں بیرک نمبر 1 میں رکھا جائے گا جس میں ماضی میں آصف علی زرادری بھی جیل کاٹ چکے ہیں جبکہ عمران خان بھی ماضی میں اسی بیرک میں ایک رات گزار چکے ہیں۔ پنجاب حکومت نے سابق وزیراعظم کو جیل میں بی کلاس دے دی، نوازشریف کو کوٹ لکھپت جیل کی بیرک میں ذاتی بستر، من پسند لباس، ٹی وی اور اخبار ملے گا، آشیانہ اسکینڈل میں گرفتار چھوٹے میاں بھی اسی جیل میں موجود ہیں۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں