الیکشن نتائج، تحریک انصاف 111، ن لیگ 68 نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب

پبلک نیوز: پاکستان بھر میں آج عام انتخابات 2018ء کے لیے پولنگ کا عمل دن بھر جاری رہا۔ جس دوران ملک بھر سے لوگوں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔ شام 6بجے پولنگ کا عمل مکمل ہوا جس کے بعد ووٹوں کی گنتی کا عمل شروع ہوا۔

مکمل نتائج کیلئے لنک ملاحظہ کریں: خیبر پختونخوا ، پنجاب ، سندھ اور بلوچستان

قومی اسمبلی کی کل 272 نشستوں میں سے 270 انتخابی دنگل ہوا جبکہ صوبائی اسمبلی کی کل 577 میں سے 570 نشستوں پر الیکشن کے لیے ووٹنگ ہوئی۔ پولنگ عمل کے دوران کچھ ایسے واقعات بھی سامنے آئے جن کا مقصد الیکشن کو سبوتاژ کرنا تھا۔ لیکن پاک فوج کی کوششوں اور ملکی عوام کے عزم نے مذموم مقاصد رکھنے والے عناصر کو کامیاب نہ ہونے دیا۔

تازہ ترین نتائج جاننے کیلئے ویڈیو دیکھیں:

الیکشن کے غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج آنا شروع ہو چکے ہیں جن کے مطابق پاکستان تحریک انصاف دوڑ میں سب سے آگے ہے جبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کا دوسرا نمبر ہے۔

ہنگامہ آرائی، جھگڑے

پولنگ کے عمل کے دوران صوابی میں پی ٹی آئی اور اے این پی کے امیدواروں میں جھگڑا، فائرنگ کا تبادلہ ہوا، حملہ میں پی ٹی آئی کے امیدوار مختیار کاکڑ اور بیٹا شدید زخمی ہو گئے،دوسری جانب لاڑکانہ میں پی ایس 11 کے پولنگ اسٹیشن پر کریکر حملہ ہو گیا جس کے دوران چار افراد شدید زخمی ہو گئے ہیں، زخمیوں کو ہسپتال میں طبی علاج کے لئے منتقل کر دیا گیا ، تاہم پولنگ کا عمل تاخیر کا شکار ہو گیا۔

کوئٹہ کے مشرقی بائی پاس کے قریب دھماکہ ، دھماکہ میں اب تک 31افراد جام شہادت نوش کر چکے ہیں، جبکہ درجنوں افراد زخمی بھی ہوئے۔ جنہیں ہستال منتقل کر دیا گیا ہے۔

سیاسی رہنما اور اہم شخصیات کے ووٹ

کراچی کے حلقہ این اے 247 اور پی پی 111 میں صدر ممنون حسین نے اپنا ووٹ کاسٹ کیا۔ کراچی میں اس حلقہ میں پاکستان تحریک انصاف کے ڈاکٹر عارف علوی، پاک سرزمین پارٹی کی فوزیہ قصوری اور ایم کیو ایم کے ڈاکٹر فاروق ستار مدمقابل ہیں۔

مسلم لیگ ن کے قائد میاں نواز شریف کی والدہ بیگم شمیم شریف لاہور کے حلقہ این اے124 میں ووٹ ڈالنے کیلئے پہنچ گئی۔انہوں نے حلقہ این اے124 کے پولنگ اسٹیشن میں ووٹ کاسٹ کر دیا۔جسے ہی نواز شریف کی والدہ کی گاڑی گورنمنٹ ٹیکنالوجی کالج ریلوے روڈ پہنچی سپورٹرز کے ہجوم ان کی گاڑی کو گھیرے میں لے لیا جس کی وجہ سے انہیں گاڑی اندر لے جانے کی اجازت نہیں ملی۔

چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ان کی اہلیہ نے راولپنڈی میں اپنا ووٹ متعلقہ حلقہ میں کاسٹ کر دیا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ ہم پاکستان کے خلاف کام کرنے والی دشمن قوتوں کا نشانہ ہیں لیکن ہم دشمن قوتوں کو شکست دینے کے لیے متحد اور مضبوط کھڑے ہیں، آج ہم دشمن قوتوں کو ووٹ کے ذریعے شکست دیں گے۔

این اے 129 میں سابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے اپنا ووٹ کاسٹ کر دیا۔ عام انتخابات کیلئے پولنگ سٹیشنز پر ووٹرز کی بڑی تعداد موجود ہے، سابق آرمی چیف جنرل (ر)راحیل شریف نے این اے 129 میں اپنا ووٹ کاسٹ کر دیا، سابق سپہ سالار چیف راحیل شریف بغیر پروٹوکول پولنگ سٹیشن پر آئے اور قطار میں لگ کر اپنی باری کا انتظار کیا اور ووٹ کاسٹ کیا۔

بلاؤل بھٹو نے لاڑکانہ میں این اے200 میں اپنا ووٹ  ڈالا اور ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو بھی کی، انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی اچھی خاصی اکثریت سے کامیابی حاصل کرے گی۔ چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ عوام اپنے ووٹ کا حق استعمال کریں۔ انہوں نے کوئٹہ میں ہونے والے دہشتگردی کے واقعہ کی شدید مذمت کی۔

پاکستان تحریک انصاف چیئرمین عمران خان اپنا ووٹ کاسٹ کرنے حلقہ این اے 53 میں پہنچ گئے۔ ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد چیئرمین پی ٹی آئی نے نے میڈیا سے گفتگو بھی کی۔ انہوں نے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ووٹ ضرور ڈالیں اور ملک کی خاطر اپنا فرض ادا کریں۔

 

عمران خان نے کہا کہ سارے پاکستانیوں کو کہتا ہوں کہ نکلیں اور ووٹ ڈالیں، یہ نہیں کہتا کہ تحریک انصاف کوووٹ ڈالیں لیکن ووٹ ضرور ڈالیں اور ملک کی خاطر اپنا فرض ادا کریں۔ عمران خان نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ جب تک آخری گیند نہیں ہو جاتی تب تک فیصلہ نہیں ہوتا۔

 

چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار لاہور کے حلقہ این اے 130 میں ووٹ کاسٹ کرنے کے لئے پہنچ گئے، جہاں انہوں نے برکت مارکیٹ گرلز کالج میں اپنا ووٹ کاسٹ کیا۔ ووٹ کاسٹ کے بعد باہر آنے پر انہوں نے میڈیا سے گفتگو کی جہاں ان کا کہنا تھا کہ میں نے 25 جولائی کو الیکشن کرانے کا اپنا وعدہ پورا کر دیا۔آج بہت بڑا دن ہے اور ووٹ کاسٹ کرکے اپنی ذمہ داری پوری کی ہے،عوام اپنا جمہوری حق استعمال کریں۔

پی پی پی کے سینئر رہنماء سید خورشید شاہ اپنا ووٹ کا سٹ کرنے پولنگ اسٹیشن پہنچ گئے، سید خورشید شاہ اپنا ووٹ این اے 207 سکھر اسلامیہ کالج کے پولنگ اسٹیشن نمبر 29 میں کاسٹ کیا۔

فیصل آباد این اے 108 کے امیدوار اور سابق ایم اپی اے عابد شیر علی ووٹ کاسٹ کرنے پولنگ اسٹیشن پہنچ گئے۔ ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد عابد شیرعلی نے عورتوں کے پولنگ اسٹیشن کی طرف رخ کر لیا۔ جہاں پر اسسٹنٹ پریذائیڈنگ افسرسے بحث ہو گئی، جس پر مرد پولنگ سٹیشن عملے نے آکر انہیں منانے کی کوشش کی،لیکن انہوں نے ایک نہ سنی جس سے پولنگ کا عمل بھی رک گیا۔

سابق وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاھ کی ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنی پولنگ اسٹیشن واہڑ پر اپنا ووٹ کاسٹ کر لیا ہے۔ پولنگ اسٹیشنز پر لائنیں لگی ہوئی ہیں۔ انشاء اللہ پاکستان پیپلز پارٹی کی آج کامیابی ہو گی۔ اللہ پاک کرے خیر خیریت سے آج کا دن گذر جائے۔ بلاول بھٹو زرداری کی بہتر الیکشن مہم چلانے کا بھتر نتیجہ آئے گا۔ آج شام پیپلز پارٹی کامیابی کا جشن منائے گی۔

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا پولنگ اسٹیشن تبدیل، ڈھوک بودریاں سمیت وارڈ نمبر2 کے تمام ووٹرز کا پولنگ سٹیشن تبدیل، شاہد خاقان عباسی کو ووٹ کاسٹ کرنے کے لیے ایک کلومیٹر پیدل چلنا پڑے گا۔ سیکرٹری شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پولنگ اسٹیشن تبدیل کرنا سازش ہے۔

نواب شاہ سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری کی بیٹی بختاور بھٹو زرداری نے اپنا ووٹ کاسٹ کر دیا۔ نواب شاہ اور بختاور بھٹو نے اپنا ووٹ واڈا کالونی پولنگ اسٹیشن پر کاسٹ کیا۔ نواب شاہ، بختاور بھٹو زرداری کے ساتھ آصفہ بھٹو زرداری اور سابق ایم این اے عزرا فضل پیچوہو بھی انکے ہمراہ تھیں۔

 

صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف نے ماڈل ٹاؤن پولنگ اسٹیشن میں ووٹ کاسٹ کر دیا۔ انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وقت ضائع نہ کریں گھروں سے نکلیں اور ووٹ ڈالیں۔ حمزہ شہباز شریف بھی حلقہ این اے 130پہنچ گئے۔


پاکستان کی شوبز انڈسٹری کے اسٹارز بھی اپنے ووٹ دینے کا فریضہ ادا کرنے میدان میں اٗتر آئے، فلمی سٹارز ملک کے لیے اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ عام انتخابات میں بھی سٹارز نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ ہمارے سلیبرٹیز نے اپنے اپنے حلقہ میں پاکستان کی خاطر اپنا ووٹ کاسٹ کر رہی ہیں۔


ماورہ حسین ووٹ دینے کے لیے خصوصی طور پر اسلام آباد روانہ ہوئیں، جہاں ان کا ووٹ رجسٹرڈ ہے انہوں نے اپنا ووٹ کاسٹ کیا اور انگھوٹے پر نشان لگی تصویر مداحوں کیلئے شوشل میڈیا ہر شیئر کر دی۔اسی طرح بلال عباس خان،عدنان ملک،بلال خان،وسیم اکرم،ثمینا پیرزادہ،نومی انصاری،عروہ حسین اور مختلف اداکاروں نے بھی ووٹ کاسٹ کیے اور مداحوں تک اس کی خبر بھی پہنچائی۔

ووٹرز کی پولنگ اسٹیشن پر قطاریں، کئی مقامات پر ووٹنگ کے عمل میں تاخیر

لاہور سمیت ملک بھر میں سیاسی اور عوام نے اپنا حق رائے استعمال کرتے ہوئے اپنے متعلقہ پولنگ سٹیشن کا رخ کر لیا تاکہ وہ اپنے ووٹ کا حق استعمال کر سکیں۔ لاہور کے حلقے این اے 133 میں بھی پولنگ کا سلسلہ جاری ہے، پولنگ شام 6 بجے تک جاری۔ دوسری جانب لیڈیز انڈسٹریل ہوم ایف سی ایریا لیاقت آباد میں اب تک پولنگ کے عمل کا آغاز نہ ہوسکا۔

 

لاہور میں این اے 255 کے بیشتر پولنگ اسٹیشن میں تاحال پولنگ کا عمل شروع نہ ہوسکا،رہے گی۔ این اے 125 میں بھی ووٹ ڈالنے کا عمل تاخیر کا شکار،این اے 242 پولنگ 25، 26،27 اسکیم 33 میں پون گھنٹہ گزرنے کے باوجود پولنگ نہ شروع کی جاسکی۔ پولنگ کا عمل تاخیر کاشکار ہو گیا۔

پبلک نیوز ذرائع کے مطابق پورے 85307 پولنگ اسٹیشنز قائم کر دیے گئے۔ الیکشن کمیشن کے مطابق پنجاب ميں 47813، سندھ میں 17747، خیبر پختوںخوا میں 12634، جبکہ بلوچستان میں 4420اور فاٹا میں 1736پولنگ اسٹیشنز قائم کيے گئے ہيں۔ پنجاب اور اسلام آباد میں 5487، خیبرپختونخوامیں 3874، جبکہ بلوچستان کے 1768پولنگ اسٹیشنز انتہائی حساس قرار دیے گئے ہیں۔

انتخابات2018ء کیلئے 18 لاکھ 19 ہزار سے زائد انتخابی افسران اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں، جن میں سے85 ہزار 307 پریزائیڈنگ افسران اور 5 لاکھ 10 ہزار 356 اسسٹنٹ پریزائیڈنگ افسران اور 2 لاکھ 55 ہزار 178 پولنگ افسران شامل ہیں

قومی اور صوبائی حلقوں میں الیکشن


قومی اسمبلی کے 272 میں سے 270 حلقوں جب کہ صوبائی اسمبلیوں کے 577 میں سے 570 حلقوں میں الیکشن ہو رہا ہے۔ دوسری جانب قومی، صوبائی اسمبلیوں کے 8 حلقوں میں انتخابات ملتوی کر دیئے گئے۔ سندھ اسمبلی کے حلقہ پی ایس 6 کشمور سے میر شبیر بجارانی الیکشن سے پہلے ہی بلامقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔

حساس پولنگ اسٹیشنز،سکیورٹی اقدامات

عام انتخابات2018 کے موقع پر سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے جس کے تحت 3 لاکھ 70 ہزار سے زائد فوجی اور 4 لاکھ 49 ہزار سے زائد پولیس اہلکار سکیورٹی کے لیے تعینات کیے گئے جو اپنے ڈیوٹی فرائض سر انجام دیں گے۔ ہر پولنگ اسٹیشن کے اندر اور باہر 2،2 فوجی اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔

 

 

عطاء سبحانی  1 سال پہلے

متعلقہ خبریں