چینی باشندوں سے شادی کرنیوالی لڑکیوں کا تحفظ کیلئے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع

لاہور (پبلک نیوز) چینی باشندوں سے شادی کرنے والی لڑکیوں صائمہ تبسم اور شبانہ عاشق نے تحفظ کے لیے لاہور ہائیکورٹ درخواست دائر کر دی۔ مؤقف اختیار کیا ہے کہ ایف آئی اے حکام نے کئی گھنٹے ائیر پورٹ پر غیر قانونی حراست میں رکھا اور چینی شوہروں کے ساتھ جانے سے روکا دیا اور چینی شوہروں کو زبردستی بیویوں کے بغیر چین بھجوا دیا گیا۔

 

تفصیلات کے مطابق چینی باشندوں سے شادی کرنے والی لڑکیوں نے تحفظ کے لیے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر لیا۔ صائمہ تبسم اور شبانہ عاشق نے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی۔ درخواست میں وزارت خارجہ، چیف سیکرٹری پنجاب اور ڈائریکٹر ایف آئی اے کو فریق بنایا گیا ہے۔ وکیل درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ صائمہ تبسم نے لی یانگ چینگ سے 25 جنوری نکاح کیا اور شبانہ عاشق نے زو شو فینگ سے کرسچن قوانین کے تحت 18 جنوری کو شادی کی۔

 

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ ایف آئی اے نے 7 مئی کو چین جانے والے جہاز سے چینی شوہروں کے ہمراہ آف لوڈ کر دیا۔ ایف آئی اے حکام نے کئی گھنٹے ائیر پورٹ پر غیر قانونی حراست میں رکھا اور چینی شوہروں کے ساتھ جانے سے روکا دیا اور چینی شوہروں کو زبردستی بیویوں کے بغیر چین بھجوا دیا گیا۔ ایف آئی اے حکام نے پاسپورٹ اور دیگر دستاویزات قبضہ میں لے رکھی ہیں۔

 

وکیل صائمہ تبسم اور شبانہ عاشق نے درخواست میں استدعا کی ہے کہ ایف آئی اے کو درخواست گزاروں کو غیر قانونی ہراساں کرنے سے روکا جائے۔ ایف آئی اے کو درخواست گزاروں کے پاسپورٹ اور دیگر دستاویزات واپس کرنے کا حکم دیا جائے۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں