پاکستان میں تھیلسیمیا کے مریضوں کےلیے اچھی خبر

کراچی (پبلک نیوز) پاکستان میں تھیلسیمیا کے مریضوں کے لیے اچھی خبر۔ پاکستانی ڈاکٹروں نے مقامی سطح پر تھیلسیمیا کے مریضوں کے لیے دوا تیار کر لی۔ جس سے نہ صرف مریض صحت مند ہو گا بلکہ ان کے جسم میں خون کے مقدار بنانے کی صلاحیت بھی بڑھے گئی۔

تفصیلات کے مطابق پاکستانی ڈاکٹروں نے مقامی سطح پر تھیلسیمیا کے مریضوں کے لیے دوا تیار کرلی۔ جس سے نہ صرف مریض صحت مند ہو گا بلکہ ان کے جسم میں خون کے مقدار بنانے کی صلاحیت بھی بڑھے گئی۔ پاکستانی ڈاکٹروں کا کمال۔ کینسرکے لیے استعمال ہونیوالی دوا کو تھیلسیمیا کے لیے کار آمد بنا لیا۔

ہائیڈرو کسیوریا نامی دوائی کو کراچی کے این آئی سی وی ڈی میں تیار کیا گیا۔ ہیماٹا لوجسٹ ڈاکٹر طاہر شمسی کا کہنا تھا کہ دوا کے استعمال سے خون بننے کی صلاحیت حیرت انگیز طور پر واپس آجاتی ہے، پاکستان میں سالانہ دس سے بارہ ہزار بچے اس موذی مرض کا شکار ہو جاتے ہیں۔ بھارت اور ایران میں اس دوا سے حوصلہ افزانتائج ملے ہیں۔

ڈاکٹرز کے مطابق پاکستان میں تھیلسیمیا کے پھیلاو کی بڑی وجہ کزن میرجز ہیں شادی سے پہلے اس کی تشخیص ضروری ہے۔ نئی دوا کی دریافت صرف  مریضوں کے لیے ہی نہیں والدین اور حکومت کے لیے بھی اچھی خبر ہے۔ ماہرین کے مطابق اس سے مریضوں کو سالانہ دو لاکھ جب کہ حکومت کو آٹھ ارب روپے کی بچت ہوگی۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں