حکومت کا قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کیلئے یکطرفہ پیشرفت کا فیصلہ

اسلام آباد (پبلک نیوز) چئیرمین پبلک اکاونٹس کمیٹی کی نامزدگی میں تاخیر پر حکومت کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا۔ حکومت نے قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کے لیے یکطرفہ پیشرفت کا فیصلہ کر لیا۔ اسپیکر قومی اسمبلی کو حکومت اور اتحادیوں پر مشتمل کمیٹیاں تشکیل دینے کا عندیہ دیئے دیا گیا۔

حکومت نے قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کے لیے متبادل پلان تیار کرلیا۔ کمیٹیوں کی تشکیل کے معاملہ پر حکومت نے یک طرفہ پیش رفت کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق حکومت کی جانب سے قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کے لیے سپیکر قومی اسمبلی کو گرین سگنل دیئے دیا گیا ہے۔

حکومت نے اسپیکر کو تجویز دی ہے کہ قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کا عمل فوری شروع کیا جائے۔ حکومت کا موقف ہے کوئی اپوزیشن جماعت اپنے رکن کا نام نہ دے تو کمیٹیوں میں حکومت اور اتحادی ارکان شامل کر لیا جائے۔ حکومت نے یہ بھی واضع کیا ہے کہ قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل آئینی معاملہ ہے  مزید تاخیر نہیں کی جا سکتی۔

حکومتی نمائندوں کا موقف ہے کہ حکومت نے پارلیمانی دھاندلی کمیٹی اور نیب اصلاحات کے لیے قانون سازی کا اپوزیشن کا مطالبہ مان لیا لیکن اپوزیشن تعاون کرنے کو تیار نہیِں۔ حکومتی ذرائع بتاتے ہیں کہ اپوزیشن کے عدم تعاون پر حکومت یکطرفہ قائمہ کمیٹیاں بنانے پر مجبور ہے۔ اسپیکر اسد قیصر حکومتی تجویز پر مشاورت شروع کر سکتے ہیں۔ چیئرمین پی اے سی کی تقرری میں تاخیر کے باعث 16 قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کا عمل بھی رک گیا ہے۔

حارث افضل  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں