حکومت کیلئے زرمبادلہ کے ذخائر کو13ارب ڈالر کی سطح پر لانا چیلنج بن گیا

اسلام آباد(پبلک نیوز) ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں مسلسل کمی، حکومت کو ملکی ضروریات کیلئے آئندہ مالی سال میں 19ارب ڈالر درکار ہیں۔ حکومت کو بیرونی سرمایہ کاری سے 2.5ارب ڈالرحاصل ہوں گے۔ ملک کو اگلے دو سال مذید قرضوں کا بوجھ اٹھانا پڑے گا۔

 

حکومت کیلئے زرمبادلہ کے ذخائر کو13ارب ڈالر کی سطح پر لانا چیلنج بن گیا، ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق اس وقت زرمبادلہ کے ذخائر 8 ارب ڈالر ہیں جو رواں ماہ کے آخر تک 7 ارب ڈالر رہ جاہیں گے۔ حکومت کو ملکی ضروریات کیلئے آئندہ مالی سال میں 19 ارب ڈالر درکار ہیں۔ حکومت کو بیرونی قرضوں کی ادائیگی کیلئے 10.7 ارب ڈالر درکار ہیں۔ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو پورا کرنے کیلئے 8.3 ارب ڈالر درکار ہوں گے۔ حکومت نے آئندہ مالی سال کیلئے آئی ایم ایف پروگرام کے تحت مذید 12 ارب ڈالر کے غیرملکی قرضے لینے کا فیصلہ کیا۔

 

ذرائع کے مطابق حکومت کو بیرونی سرمایہ کاری سے 2.5 ارب ڈالر حاصل ہوں گے، اداروں کی نجکاری سے 2 ارب ڈالر حاصل ہوں گے۔ ملک کو اگلے دو سال مذید قرضوں کا بوجھ اٹھانا پڑے گا،10.7 مذید قرض لینے کیلئے ارب ڈالرکے قرضوں کی ادائیگی کرنا ضروری ہے۔ حکومت کو یوروبانڈ کے اجراء اور عالمی اداروں سے قرض کی مد میں12.3ارب ڈالر ملنے کا امکان ہے۔ اسٹیٹ بینک کو مالی سال 2019-20میں زرمبادلہ کے ذخائر مستحکم رکھنے کیلیے6سے 7ارب ڈالر درکار ہیں۔

عطاء سبحانی  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں