کرپشن میں پنجاب کے سرکاری ملازمین سب سے آگے

لاہور (ادریس شیخ) پنجاب کے سرکاری ملازمین ملک میں سب سے زیادہ کرپٹ نکلے، پنجاب بھر سے 170 سرکاری افسروں نے مقدمات سے بری ہونے کے لیے نیب میں درخواست دی۔

 

ملک بھر سے مجموعی طور پر 399 سرکاری ملازمین نے نیب کو پلی بارگین کی درخواست دی۔ پنجاب کے 170، کے پی کے کے 114، سندھ کے 69 اور بلوچستان کے 46 سرکاری ملازمین نے نیب کو پی بی کی درخواست دی۔

 

پنجاب میں نیب راولپنڈی کو84، نیب لاہور کو 73 اور نیب ملتان کو 13 سرکاری ملازمین نے پی بی کی درخواستیں دیں۔ نیب نے 5 ارب 73 کروڑ 49 لاکھ 90 ہزار 382 روپے کی پلی بارگین کی درخواستیں منظور کیں۔ نیب نے سرکاری ملازمین سے پی بی کی مد میں 4 ارب 18 کروڑ 67 لاکھ 57 ہزار 723 روپے وصول کیے۔

 

سرکاری ملازمین سے سے ابھی 1 ارب 54 کروڑ 82 لاکھ 32 ہزار 6 سو 59 روپے وصول کیے جانے ہیں۔ سابق چیئرمین واپڈا زاہد علی اکبر، سابق پرنسپل پنجاب یونیورسٹی کالج آف انفامیشن ٹیکنالوجی لاہور ماجد نعیم، سابق ڈی آئی جی جیل خانہ جات غلام سرور، سابق انکم ٹیکس کمشنر طاہر لطیف، چیف اکائونٹ آفیسر ریلوے خالد محمود پلی بارگین کرنے والوں میں شامل ہیں۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں