کراچی: تجاوزات کے خاتمہ کیلئے جاری آپریشن کا دائرہ کار مزید وسیع

کراچی(پبلک نیوز) خوشگوار تبدیلی کے اثرات رونما ہونے لگے، شہر کراچی کا حسن واپس لوٹنے لگا۔ لائٹ ہاؤس لنڈا بازار اور آرام باغ فرنیچر مارکیٹ میں غیر قانونی تجاوزات کی باری آ گئی۔

 

شہر کراچی کے حسن کی بحالی، تجاوزات کے خاتمے کیلئے آپریشن کا دائرہ کار وسیع کر دیا گیا۔ شہر قائد میں تجاوزات کیخلاف تاریخ کا بڑا آپریشن۔ صدر ایمپریس مارکیٹ سے شروع ہونے والا گرینڈ آپریشن شہر کے کونے کونے تک پھیل گیا۔ سپریم کورٹ کے احکامات پر کے ایم سی، ڈی ایم سیز، کے ڈی اے اور دیگر ادارے ایسے متحرک ہوئے کہ غیرقانونی تعمیرات کرنے والوں نے خود سے ہی تجاوزات ٹھکانے لگانا شروع کر دیں۔

 

آرام باغ فرنیچر مارکیٹ میں آپریشن کیلئے ہیوی مشینری طلب کرلی گئی۔ آپریشن کے دوران پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری بھی تعینات۔ کے الیکٹرک کی جانب سے آرام باغ فرنیچر کے اطراف بجلی کی فراہمی بھی معطل کر دی گئی۔ لائٹ ہاؤس اور اطراف میں ساٹھ پینسٹ سال سے مقیم کرائے دینے والے دکانداروں کے لبوں پر شکوہ۔ان کا کہنا ہیں کہ نہ نوٹس دیا نہ ہی متبادل جگہ فراہم کی گئی۔

 

کے ایم سی کی جانب سے لاہٹ ہاؤس کے دکانداروں کو دکانیں خالی کرنے کے لیے دو گھنٹے کی مزید مہلت دیدی گئی۔ الٹی میٹم ختم ہوتے ہی تجاوزات اور دکانیں مسمار کرنے کا اعلان بھی کردیا گیا۔ لائٹ ہاؤس اور اطراف میں قائم غیر قانونی تجاوزات کے خلاف آپریشن کے سبب شہریوں کو ٹریفک جام کے مسائل بھی درپیش رہے۔ آج آرام باغ پارک سے متصل معراج مارکیٹ کی 176 دکانوں کو مسمار کیا جا رہا ہے۔ فٹ پاتھ پر بنائی گئی مارکیٹ 38 سال پرانی ہے، جبکہ لائٹ ہاؤس میں نالے پر قائم 280 دکانوں کا بھی خاتمہ کیا جائے گا۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں