حمزہ شہباز اربوں روپے مالیت کی 21 کمپنیوں کے مالک نکلے

لاہور(شاکر محمود اعوان) اپوزیشن لیڈر پنجاب حمزہ شہباز کیسے اربوں کے اثاثوں کے مالک بنے؟ کیسے قسمت کہ دیوی ان پر مہربان ہوئے پبلک نیوز نے کھوج لگا لیا؟ سکیورٹی ایکسچینج آف پاکستان اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو سمیت دیگر اداروں کے پاس کیا کیا۔

 

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ حمزہ شہباز نے اپنے اثاثوں کی مالیت ایف بی آر دستاویزات میں مارکیٹ ویلیو سے بہت کم ظاہر کی ہے۔ حمزہ شہباز کی جوہر ٹاؤن میں 9 قیمتی جائیدادیں۔ ٹھوکر نیاز بیگ میں 5 جائیدادیں اور ڈسٹرکٹ چینیوٹ، مین 151، کنال کی زرعی زمین بھی ہے۔ حمزہ شہباز نے ایف بی آر کے روبرو 21 کمپنیوں میں موجود شئیرز کی مالیت 13 کروڑ 29 لاکھ 46 ہزار 360 روپے ظاہر کی ہے۔

 

حمزہ شہباز رمضان شوگر مل، حمزہ سپنگ مل، کلثوم ٹیکسٹائل، خالد سراج انڈسٹریز، مدنی ٹریڈنگ، مدینہ کنسٹرکشن، شریف فیڈ، ملز، شریف پولٹری فارمز، شریف ڈیری فارمز، رمضان انرجی لمیٹیڈ، شریف ملک پراڈکٹس، کرسٹل پلاسٹک، اتفاق فاونڈریز، اتفاق برادرز، الیاس انٹرپرائز، یونٹ پاور لمیٹیڈ، العریبہ شوگر مل، حدیبہ پیپر مل، حدیبہ انرجنگ اور محمد بخش ٹیکسٹیائل میں شراکت دار ہیں۔

 

حمزہ شہباز نے ایف بی آر کے روبرو اپنے اثاثوں کی مالیت 41 کروڑ 12 لاک4ہزار 597 روپے ظاہر کر رکھی ہے۔۔۔اربوں روپے اثاثوں کے مالک حمزہ شہباز اپنی ہی 4 کمپنیوں کے مقروض بھی ہیں۔۔۔دستاویزات کے مطابق حمزہ شہباز شریف فیڈ ملز، شریف پولٹری فارمز، مدنی ٹریڈر اور مدینہ کنسٹرکشن کے 9 کروڑ 97 لاکھ 96 ہزار 649 کے مقروض ہیں۔

عطاء سبحانی  3 روز پہلے

متعلقہ خبریں