گزشتہ 6 ماہ میں آٹھ ہزار نئی کمپنیاں پاکستان میں رجسٹرڈ ہوچکی ہیں: ہارون شریف

اسلام آباد (پبلک نیوز) چئیرمین بورڈ آف انوسٹمنٹ ہارون شریف اور مشیر برائے کامرس اور ٹیکسٹائل رزاق داود نے مشترکہ پریس بریفنگ کی۔ پریس کانفرنس میں سرمایہ کاری کے لیے سازگار ماحول بنانے کے لیے اصلاحات کا اعلان کیا گیا۔

 

چئیرمین بورڈ آف انوسٹمنٹ ہارون شریف اور مشیر برائے کامرس اور ٹیکسٹائل رزاق داود نے مشترکہ پریس بریفنگ کی۔ پریس کانفرنس میں سرمایہ کاری کے لیے سازگار ماحول بنانے کے لیے اصلاحات کا اعلان کیا گیا۔

 

ہارون شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان کی رینکنگ ان اصلاحات سے بہتر ہوگی۔ نومبر میں چین کے دورہ پر مختلف ممالک کے 10 تجارتی وزیر آئے ہوئے تھے۔ گزشتہ 6 ماہ میں آٹھ ہزار نئی کمپنیاں پاکستان میں رجسٹرڈ ہوچکی ہیں۔ کسی بھی کمپنی کو رجسٹرڈ کرنے کیلئے صرف چار گھنٹ کا وقت درکار ہوتا ہے۔ اس سلسلے میں تمام متعلقہ اداروں کو محتاط کر دیا گیا ہے۔ اس کا سرکاری طور پر ٹیسٹ بھی کر لیا گیا۔ ٹیکس کی 67 ادائیگیوں کی بجائے 10 ادائیگیاں کردی گئی ہیں۔ پراپرٹی تعمیر کے پرمٹ کیلئے سنگل پورٹل بنا دیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں 30 وفاق اور صوبائی اداروں سے رابطہ کیا ہے۔ کوالٹی کنٹرول کے ادارے بھی قائم کر رہے ہیں۔ ٹیکس اداروں میں سروس کو آن لائن کر دیا گیا ہے۔ ہر بندہ گھر میں بیٹھ کر آن لائن پراپرٹی رجسٹرڈ کر سکتا ہے۔  ہر ادارے کی کاکردگی کی مانیٹرنگ اور بی او آئی خود ہی کریگا۔ اگلے سال ہم سروے بھی شروع کررہے ہیں۔

اس موقع پر رزاق داود کا کہنا تھا کہ کینیا کے صدر اور روس کے صدر نے بھی ایز آف ڈونگ بزنس کو سراہا۔ وزیر اعظم نے 100 ریکنگ حاصل کرنے کی ہدایت کی ہے۔ اس سلسلے میں کافی پیش رفت ہوئی ہے۔ 15 اپریل کو ورلڈ بینک پاکستان کے دورہ پر آئیگا۔ بجلی کی فراہمی کے سلسلے میں اصلاحات ہوچکی ہیں۔ پاکستان میں زیادہ تر کمپنیاں کوالٹی پر توجہ نہیں دی۔ پاکستان میں خوراک اور دیگر اشیاء کا ایک معیار مختص نہیں ہے۔ اب صرف معیاری پرڈکٹس کے لیے سرمایہ کاری کی اجازت دی جائیگی۔ اب کوالٹی کنٹرول کے معیار اور کوالٹی کے قومی ادارے بنائے جائیں گے۔

 

حارث افضل  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں