آصف زرداری کی گرفتاری یا آزادی، ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کل ہو گی

اسلام آباد(پبلک نیوز) اسلام آباد ہائیکورٹ میں جعلی بنک اکائونٹس کیس، سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری یا آزادی، ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کل پھر ہو گی۔ آصف علی زرداری اور فریال تالپور کے وکلاء کل جواب الجواب جمع کرائیں گے۔

 

اسلام آباد ہائیکورٹ میں جعلی بنک اکائونٹس کیس، سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری یا آزادی، ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کل پھر ہو گی۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کا دو رکنی بینچ آصف زرداری اور فریال تالپور کی ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کرے گا۔ جسٹس عامرفاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی بینچ میں شامل ہیں۔ آصف علی زرداری اور فریال تالپور کے وکلا کل جواب الجواب جمع کرائیں گے۔

 

گزشتہ سماعت میں نیب پراسیکیوٹر جہانزیب بھروانہ نے دلائل دئیے۔ نیب پراسیکیوٹر جہانزیب بھروانہ کے مطابق 2014 اور 2015 کے دوران زرداری گروپ کی جانب سے جعلی اکاونٹس اصل بینفشری کو ظاہر کیے بغیر کھولے گئے۔ کرپشن، رشوت ستانی، سرکاری وسائل کے پیسوں کی خفیہ منتقلی کے لئے جعلی اکاؤنٹس کا استعمال کیا گیا۔ زرداری گروپ اکاؤنٹس سے رقم اویس مظفر کے اکاونٹ میں منتقل ہوئیں۔ زرداری گروپ اکاونٹس سے رقوم منتقلی فریال تالپور کے دستخط سے ہوئیں۔

 

زرداری گروپ ٹرانزیکشنز پر سٹیٹ بنک نے مشتبہ رقوم ٹرانزیکشن رپورٹ بھی جاری کی۔ یہ تہہ در تہہ انتہائی پوشیدہ پیسوں کی منتقلی کا بھیانک جرم ہے۔ عدالت نے نیب کے دلائل سننے کے بعد آصف علی زرداری اور فریال تالپور کی عبوری ضمانت میں 10 جون تک توسیع کر رکھی ہے۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں