لاہور ہائیکورٹ: شہباز شریف کی درخواست ضمانت پر سماعت 6 فروری تک ملتوی

لاہور(پبلک نیوز) شہباز شریف کی درخواست ضمانت پر روزانہ کی بنیاد پر سماعت کا فیصلہ، جبکہ نیب نے جواب داخل کرنے کے لئے مزید مہلت مانگ لی، عدالت نے کہا آپ نے نوٹسز کے باوجود جواب جمع نہیں کرایا۔

 

سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی ضمانت پر رہائی کی درخواست کی سماعت لاہور ہائی کورٹ میں جسٹس ملک شہزاد احمد خان کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے کی، عدالت نے نیب کو آج جواب داخل کرنے کے لیے طلب کیا تھا، تاہم نیب حکام نے عدالت سے جواب داخل کرنے کے لیے مزید مہلت مانگ لی، جس پر عدالت نے کہا آپ نے نوٹسز کے باوجود جواب جمع نہیں کروایا۔

 

عدالت نے کہا پہلے درخواست گزار کے وکلا کے دلائل سن لیتے ہیں، جس پر وکیل نیب نے کہا کہ جواب جمع ہونے سے پہلے ڈیفنس کے وکلاء کے دلائل نہیں سنے جا سکتے، عدالت نے شہباز شریف کے وکلاء کو دلائل دینے کی اجازت دے دی۔ عدالت نے حکم دیا۔ کیس کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر کی جائے گی۔ عدالت نے سوال کیا پیراگون اسکیم کس کی ہے۔

 

وکیل شہباز شریف نے عدالت کو بتایا کہ پیرا گون ندیم ضیا کی ہے اور شہباز شریف اس کو نہیں جانتے، مزید کہا کہ نیب پندرہ والیم کے ریفرنس میں ایک بھی ثبوت پیش نہیں کر سکا،عدالت نے کہا کہ شہباز شریف نے یہ اختیار ایل ڈی اے کو دے دیا۔ وکیل شہباز شریف نے کہا کہ میرے مؤکل کے خلاف کوئی بھی 161 کا بیان ریکارڈ نہیں کرایا گیا۔


وکیل شہباز شریف نے عدالت میں کہا کہ حکومت نے کسی سے رقم لی ہی نہیں اور نیب کہتا ہے کہ 61 ہزار لوگوں کو بے گھر کر دیا، 31 سو کنال زمین برکی روڈ پر موجود ہے سرکار کا ایک روپیہ بھی اس پراجیکٹ پر خرچ نہیں ہونا تھا، دلائل سننے کے بعد عدالت نے سماعت 6 فروری تک ملتوی کر دی۔

عطاء سبحانی  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں