حکومت چلانے کیلئے پہلے ٹریننگ لیں، پھر سلیکٹ ہو کر آئیں: حنا ربانی کھر

اسلام آباد (پبلک نیوز) قومی اسمبلی میں مسلسل دوسرے روزبھی ہنگامہ، حکومتی اور اپوزیشن ارکان کے ایک دوسرے پر تابڑ توڑ حملے، مراد سعید کی تقریر کے دوران اپوزیشن کا شور شرابہ، ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں۔ اپوزیشن ارکان نے اسپیکرڈائس کے سامنے دھرنا دیا تو ڈپٹی سپیکر نے اجلاس کچھ دیر کے لیے ملتوی کر دیا۔

پیپلزپارٹی کی رہنماحناربانی کھرکی قومی اسمبلی میں حکومت پرکڑی تنقید۔ کہا جو ملک درست کرنے کی بات کرے اسے غدار کہا جاتا ہے۔ حکومت چلانے کے لیے ٹریننگ چاہیے تو پہلے ٹریننگ لیں پھرسلیکٹ ہو کر آئیں۔

حکومتی بنچوں سے مرا دسعید جواب دینے اٹھے تو اپوزیشن ارکان نے سیٹوں پر کھڑے ہو کر شورشرابہ کیا اور"گوبے بی گو" کے نعرے شروع کر دئیے۔

مراد سعید بھی بھلا کہاں ہار ماننے والے تھے۔ بلاول بھٹو اور نوازشریف پر تنقید کے خوب نشترچلائے۔ پارٹی قیادت پر تنقید کی تو اپوزیشن ارکان نے ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑدیں اور اسپیکر ڈائس کا گھیراؤ کر لیا۔

اس سے پہلے اسمبلی میں اظہارخیال کرتے ہوئے وزیر توانائی عمر ایوب نے کہا کہ پچھلی حکومتوں کا خمیازہ ہم بھگت رہے ہیں۔ 4ماہ میں 51ارب کی وصولیاں کیں۔

حالات کنٹرول سے باہرہوئے توڈپٹی اسپیکرنے اجلاس ملتوی کردیا۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں