اخلاق احمد کو دنیا سے رخصت ہوئے 19برس بیت گئے

لاہور (پبلک نیوز) پاکستانی فلموں کے معروف پلے بیک سنگر اخلاق احمد کو اس دنیا سے رخصت ہوئے 19برس بیت گئے۔ دلکش آواز کے مالک گلوکار اخلاق احمد کے مداح ان کی 19ویں برسی منا رہے ہیں۔

اخلاق احمد 8اگست 1946 کو بھارت کے شہر دہلی میں پیدا ہوئے اور بعدازاں کراچی منتقل ہو گئے۔ نامور پلے بیک سنگر اخلاق احمد کی شخصیت کا ہر پہلو دلکش تھا فنی سفر کا آغاز کراچی میں ندیم اور مسعود رانا کے ساتھ ایک سٹیج پرفارمنس سے کیا اور پھر تینوں سنگیت کے افق پر ستارے بن کر چمکے۔

اخلاق احمد 10سال تک بام عروج پر رہے انہوں نے لاتعدد پنجابی اور اردو فلموں میں اپنی آواز کا جادو جگایا۔ اخلاق احمد کے گائے ہوئے گانے فلم کی کامیابی کی ضمانت سمجھے جاتے تھے۔

ان کے مقبول گیتوں میں فلم ‘نہیں ابھی نہیں’ کا گانا ‘سماں وہ خواب کا سماں، فلم ‘مہربانی’ کا گانا کبھی خواہشوں نے لوٹا، کبھی زندگی نے مارا، فلم ‘آئینہ’ کا گانا حسین وادیوں سے یہ پوچھو سمیت سینکڑوں گیت بہت مشہور ہوئے۔

اخلاق احمد کینسر کے مرض میں مبتلا ہوکر 4اگست 1999کو اس فانی دنیا سے رخصت ہوگئے لیکن ان کی مدھر آواز آج بھی شائقین موسیقی کے کانوں میں رس گھول رہی ہے۔ انڈسٹری میں بے شمار خدمات سرانجام دینے پر اخلاق احمد کو صدیوں یاد رکھا جائے گا۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں