سپریم کورٹ کا نجی اسکولوں کی فیسوں میں اضافے سے متعلق اہم فیصلہ

اسلام آباد(پبلک نیوز) سپریم کورٹ کا فیصلہ، ملک بھر کے پانچ ہزار سے زیادہ فیس وصول کرنے والے نجی سکول فیس میں بیس فیصد کمی کریں گے، فیس کی بروقت ادائیگی نہ کرنے والے والدین کے خلاف بھی کارروائی ہو گی، سکالر شپ پر اثر پڑے گا نہ اساتذہ کی تنخواہیں کاٹی جائیں گی۔

 

سپریم کورٹ نے نجی اسکولوں کی فیسوں سے متعلق کیس کا فیصلہ جاری کر دیا۔ جسٹس اعجازالاحسن نے فیصلہ تحریرکیا ہے۔ فیصلے میں عدالت نے ملک بھر کے نجی اسکولوں کی فیسوں میں بیس فیصد کمی کا حکم دیتے ہوئے قرار دیا کہ اطلاق پانچ ہزار سے زیادہ فیس پر ہو گا۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ والدین فیس مقررہ وقت تک ادا کریں۔ جو ایسا نہیں کرے گا اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

متعلقہ خبر:ایف آئی اے نے نجی اسکولوں کی فیسوں کی تحقیقاتی رپورٹ وزارت داخلہ کو بھجوا دی

عدالت نے فیصلے میں کہا ہے کہ فیسوں میں کمی سے اسکالر شپ اور اسکول کی سہولیات پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ اساتذہ کی تنخواہوں میں کمی نہیں کی جائے گی۔ عدالت نے عدالتی حکم سے متعلق والدن کو تضحیک آمیز خطوط لکھنے والے اسکولوں کو نوٹس جاری کرتے ہوئے وضاحت طلب کی ہے۔

 

فیصلے میں ایف آئی اے کی جانب سے اسکولوں کے قبضے میں لئے گئے ریکارڈ کاپی کر کے واپس کرنے کا حکم بھی دیا گیا ہے۔ فیصلے میں سپریم کورٹ رجسٹرار آفس کو ہدایت کی گئی ہے کہ ہیڈ اسٹارٹ اور ایکول لائٹ اسکول کی الگ سے فائلیں تیار کی جائیں۔ جس پر سماعت اٹھائیس جنوری کو ہو گی۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں