اگر ہم نے خود کو تبدیل نہ کیا تو ترقی نہیں کریں گے:عمران خان

اسلام آباد(پبلک نیوز) وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہم قرضوں پر ہر روز 6 ارب روپے سود ادا کر رہے ہیں۔ پاکستان پر 30 ہزار ارب کا قرضہ ہے۔ پہلے کبھی پاکستان کو اتنے چیلنجز نہیں تھے جتنے آج ہیں۔


وزیراعظم عمران خان کا اسلام آباد میں سول سرونٹس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کوئی بھی چیز دنیا میں ناممکن نہیں ہے، ناممکن کو ممکن بنانے کے لئے ہمشہ انسان کو خود کو بدلنا پڑتا ہے۔ عوام، بیوروکریسی اور سیاستدانوں نے خود کو بدلنا ہے اگر ہم خود کو تبدیل نہیں کریں گے تو ترقی نہیں کریں گے۔ ملک میں کرپشن سب سے بڑا مسئلہ ہے اور احتساب کے بغیر ملک نہیں بچ سکتا۔

 

وزیراعظم نے خطاب کے دوران کہا کہ دنیا میں سب سے زیادہ پاکستان میں بچے گندہ پانی پینے سے مرتے ہیں، زچگی کے دوران بنیادی طبی سہولیات نہ ہونے پر خواتین مر جاتی ہیں۔ ہمارے پاس ملک چلانے کے لیے پیسہ نہیں، ہم نے جو قرضے لیے وہ بجائے بہتری کیلئے استعمال کریں۔ ان سے ایسے پروجیکٹ بنائے گئے جو نقصان میں جا رہے ہیں۔ اورنج اور میٹرو منصوبے کے اعدادو شمار کل کابینہ کے اجلاس میں سامنے آئے، ان پروجیکٹ پر قرضے لیے ہوئے ہیں اور سود دے رہے ہیں، اس سے مزید نقصان ہو رہا ہے۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ ہم قوم کے ووٹ پر آئے ہیں اور ان کے ٹیکس کے پیسے پر بیٹھے ہیں، قومیں چیلنجز سے نکل جاتی ہیں۔ ہم بحران سے نکلنے کی کوشش کر رہے ہیں، ہم وزیراعظم ہاؤس کے چار ہیلی کاپٹر، گاڑیاں اور بھینسیں بھی نیلام کر رہے ہیں، یہ مائنڈ سیٹ کی تبدیلی ہے۔ ہمیں اپنی سوچ کو تبدیل کرنا ہو گا، ملک کا تعلیمی نظام بگاڑ دیا گیا ہے۔ قوم کا ایک ایک روپیہ خرچ کرتے وقت سوچے کہ یہ ان بچوں پر لگ سکتا ہے جو ڈھائی کروڑ بچے سکول نہیں جاتے۔

 

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ملک جب سے آزا ہوا ہے حکمران طبقے کا تب سے ہی مائنڈ سیٹ تبدیل نہیں ہوا، گورے نے ہندوستان کے پیسوں سے شاہانہ طرز زندگی اپنایا تھا اور ہمارے حکمران طبقے نے غریب کے پیسے پر عیاشی کی گورے کی روایت کو دوبارہ سے اپنایا ہے۔ آزادی کے بعد حکومت اور عوام کو ایک ہونا چاہیے تھا لیکن نہیں ہوئے، ہمیں انگریز کے دور کی سوچ کو تبدیل کرنا ہے۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں