پاکستان کی خارجہ پالیسی کو ملکی مفاد کے لیے استعمال کریں گے: وزیر اعظم

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اپنی خارجہ پالیسی ملکی مفاد کے لیے استعمال کریں گے۔ پہلی بار پاکستان کو دنیا کے لیے کھول دیا۔ اوورسیز پاکستانی بہت محنت کر کے ملک میں پیسے بھیجتے ہیں۔ اوورسیز کی ملک سے محبت قابل تحسین ہے۔

 

پاکستان بناؤ سرٹیفکیٹ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اوورسیز منافع کمانے کے ساتھ ملک کی خدمت بھی کرسکتے ہیں۔ اوورسیز پاکستانی بہت محنت کر کے ملک میں پیسے بھیجتے ہیں۔ میں بھی کافی عرصہ اوورسیز رہا ہوں۔ شوکت خانم اسپتال کی کامیابی میں اوورسیز کا بڑا کردار ہے۔ اوورسیز کی ملک سے محبت قابل تحسین ہے۔ ابھی ملک مشکل حالات میں ہے۔ پاکستان بناؤ سرٹیفکیٹ کا اجراء بہت پہلے ہو جانا چاہیے تھا۔

 

 

بیلنس آف پیمنٹ کم ہوا ہے، مکمل ختم نہیں ہوا۔ ملک کرپشن اور بدانتظامی کے باعث پیچھے گیا۔ ملائیشیا میں 22 ارب ڈالر کی سیاحت ہے۔ پاکستان میں سیاحت کے بے شمار مقامات ہیں۔ پاکستان میں سوئٹزرلینڈ سے بھی زیادہ سیاحت ہے۔ پہلے دور میں سیاحوں کا پاکستان میں آنا مشکل تھا۔ سیاحت کے لیے ہم نے ویزہ پالیسی کو آسان کیا۔

 

انشاءاللہ ملک بہت جلد ترقی کی راہ پر گامزن ہوگا۔ پاکستان کی خارجہ پالیسی کو ملکی مفاد کے لیے استعمال کریں گے۔ پہلی بار پاکستان کو دنیا کے لیے کھول دیا۔ آئی ایم ایف میں جانا سب سے آسان کام تھا۔ آئی ایم ایف جانے سے عوام کو مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔ پاکستان دنیا میں ایک مثال بنے گا۔ پاکستان بناؤ سرٹیفکیٹ ملک کو ترقی کی راہ پر لائے گا۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں