امریکی صدر کی جانب سے مسئلہ کشمیر میں ثالثی کی پیشکش پر بھارت جل بُھن گیا

واشنگٹن (پبلک نیوز) صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم عمران خان کو مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کر دی ہے۔ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بتایا کہ بھارتی وزیراعظم نے بھی مقبوضہ کشمیر کے تنازع کے حل کیلئےکہا ہے۔ کچھ کرسکا تو خوشی ہو گی۔

 

تفصیلات کے مطابق غیر ملکی میڈیا نے بتایا کہ امریکی صدر نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی بھی مسئلہ کشمیر کے حل میں مدد کا کہہ چکے ہیں۔ انہیں ثالث بننے میں خوشی ہو گی۔ امریکی صدر نے کہا امریکا پاک بھارت تعلقات میں بہتری کیلئے بھی مصالحت کر سکتا ہے۔ صدر ٹرمپ نے کہا کہ کشمیر خوبصورت علاقہ ہے۔ کشمیر میں امن چاہتے ہیں۔ اسکے لئے کردار ادا کرنے کو بھی تیار ہیں۔

 

امریکی صدر کی جانب سے مسئلہ کشمیر میں ثالثی کی پیشکش پر ایک طرف بھارت جل بُھن گیا تو دوسری طرف کشمیری حریت قیادت وزیرِ اعظم عمران خان کی مشکور نظر آئی۔ امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے کشمیر میں مصالحت کی بات پر بھارت بھڑک اٹھا۔ بھارتی وزارت خارجہ نے امریکی صدر کی اس بات کی تردید کر دی کہ بھارتی وزیراعظم مودی نے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ٹرمپ سے کوئی بات کی۔

 

بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان کے مطابق بھارت تمام مسائل کے حل کے لیے دونوں ممالک کے مابین صرف باہمی گفتگو کے موقف پر قائم ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ شملہ معاہدے اور لاہور ڈیکلریشن باہمی گفتگو کے ذریعے مسائل کے حل کی بنیاد فراہم کرتے ہیں۔

 

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کی جانب سے صدر ٹرمپ کے ساتھ کشمیر کی بات کشمیری قیادت کو خوب بھائی۔ بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی نے ٹوئٹر پیغام میں لکھا کہ اپنی زندگی میں پہلا لیڈر دیکھ رہا ہوں کہ جس نے ہم نہتے کشمیریوں کیلئے آواز اُٹھائی ہے۔ وزیرِ اعظم عمران خان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے مزید لکھا کہ امریکا کو مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ بھارت پر تنقید بھی کی اور کہا اب تو دنیا جان گئی ہے کہ بھارتی سرکار جھوٹی ہے۔

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں