بھارت نے کلبھوشن تک قونصلر رسائی کا پہلا موقع گنوا دیا

 

پبلک نیوز: بھارت نے کلبھوشن یادیو تک قونصلر رسائی کی پاکستانی پیشکش ٹھکرا دی۔ اپنے جاسوس سے تنہائی میں ملاقات کا انوکھا مطالبہ کر تے ہوئے کئی شرائط بھی عائد کردیں۔

 

تفصیلات کے مطابق بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کو قونصلر رسائی دینے کے معاملے میں پاکستانی دفتر خارجہ نے مخلصانہ کوشش کرتے ہوئے  پہلے قدم بڑھایا لیکن بھارتی قیادت کی جانب سے پاکستان کی پیشکش کو ٹھکرا دیا گیا لیکن ساتھ انوکھی شرائط بھی لگاتے ہوئے ملاقات کا پہلا موقع گنوا دیا۔

 

سفارتی ذرائع کے مطابق  پاکستان نے پیشکش میں واضح کیا تھا کہ بھارتی جاسوس سے جمعہ 2 اگست کو سہ پہر 3 بجے ملاقات کروائی جا سکتی ہے۔  بھارتی دفتر خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے ٹویٹ میں پاکستان کی جانب سے پیشکش کا اعتراف بھی کیا۔ بھارت نے صرف 2 گھنٹے پہلے اپنا جواب بھیجا اور پاکستان سے جواب میں کلبھوشن یادیو تک بغیر کسی رکاوٹ کے رسائی مانگی۔

 

ذرائع کے مطابق  پاکستان کا کہنا تھا کہ کلبھوشن ایک جاسوس اور حاضر سروس کمانڈر ہے اس لیے کسی بھی قانون کے تحت اس تک بغیر رکاوٹ رسائی نہیں دی جاسکتی۔ بھارتی قونصلر رسائی کے لیے نئی تاریخ دینے یا نہ دینے کا فیصلہ بعد میں کیا جائے گا۔ عالمی عدالت انصاف میں پاکستان  نے تمام شواہد کے ساتھ اپنا مقدمہ پیش کیا جس میں کلبھوشن کا پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں کا اعترافی بیان بھی شامل تھا۔

 

سفارتی ذرائع کا کہنا تھا کہ پاکستان اپنی عالمی ذمہ داریاں پوری کرنے کے لیے پرعزم ہے لیکن بھارت کو بھی قوانین کی پاسداری کرتے ہوئے راہ  فرار اختیار کرنے کی پالیسی ترک کرنا ہو گی۔

 

احمد علی کیف  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں