مہنگائی کا جن بے قابو، مجموعی طور پر 28 اشیاء ضروریات کی قیمتوں میں اضافہ ہوا، ادارہ شماریات

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) نیا مالی سال، پہلا مہینہ، دوسرا عشرہ۔ ادارہ شماریات کے مطابق جولائی کے دوسرے عشرے کے اختتام پر مہنگائی کی شرح میں 0.48 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

 

مہنگائی کا جن بے قابو، بے چاری عوام کی چیخیں نکل گئیں۔ کیا کھائیں، کیا پیئیں، ہر چیز کی قیمت دگنی ہو گئی ہے۔

 

نئے مالی سال کے پہلے ماہ جولائی  کے دوسرے عشرے میں بھی مہنگائی کی شرح میں اضافہ رہا۔ ادارہ شماریات کے مطابق جولائی کے دوسرے عشرے کے اختتام پر مہنگائی کی شرح 0.48 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔ زندہ مرغی، انڈے، پیاز، ٹماٹر، گڑ، چینی، چنے اور پھلوں سب مہنگے۔

 

ادارہ شماریات کے مطابق دال مسور، ملک پاؤڈر، لہسن، روٹی، خوردنی تیل، بیف، مٹن، تازہ دودھ کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا۔ دھی، چائے، بجلی کے بلب، مسٹرڈ آئل، باسمتی چاول، ویجی ٹیبل گھی، سمیت 28 اشیائے ضروریات کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔

 

ادارہ شماریات کے مطابق آلو، سرخ مرچ، ایل پی جی، دال مونگ، دال ماش، گندم، اری اور کیلے سمیت 9 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔ پیٹرول، ہائی سپیڈ ڈیزل، مٹی کا تیل، بجلی، گیس نرخ، سگریٹ، نمک، صابن سمیت 16 اشیائے کی قیمتوں میں استحکام رہا۔

احمد علی کیف  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں