نواز شریف اور زرداری گینگ نے آپس میں چارٹر آف کرپشن کیا: فواد چودھری

اسلام آباد (پبلک نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات چودھری فواد حیسن نے کہا ہے کہ احسن اقبال صاحب بھول گئے کہ ن لیگ کو کس نے پاکستان پر مسلط کیا تھا۔ احسن اقبال اور شریف خاندان جنرل ضیا الحق سے پہلے کونسلر بھی منتخب نہیں ہوئے تھے۔

 

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات چودھری فواد حیسن کا کہنا تھا کہ ن لیگ کی پریس کانفرنس میں کچھ دیر پہلے ٹھگز آف پاکستان کی ٹیم نے فلاپ شو پیش کیا۔ احسن اقبال صاحب 80 کی دہائی کو بھول گئے۔ احسن اقبال صاحب بھول گئے کہ ن لیگ کو کس نے پاکستان پر مسلط کیا تھا۔ احسن اقبال اور شریف خاندان جنرل ضیا الحق سے پہلے کونسلر بھی منتخب نہیں ہوئے تھے۔ ذاتیات سے متعلق جو باتیں ہوئیں اس پر معاف کرتے ہیں۔

 

فواد چودھری کا کہنا تھا کہ ن لیگ کا موقف یہ ہے کہ ہم تو چور ہیں لیکن باقی بھی چور ہیں۔ ذاتی حملوں پر بات نہیں کروں گا۔ آج کی نیوز کانفرنس میں انہوں نے کرپشن پر جواب نہیں دیا۔ عوام کو آگاہ کرتے کہ جو کرپشن کی ان کے لیڈر نے کی وہ کیوں کی۔  جج صاحب نے بڑا سادہ سوال پوچھا کہ پیسے آئے کہاں سے۔ ملک کے باہر جو کمپنیاں بنائی گئیں، یہ سب کیا تھا۔ ان کا صرف ایک کاروبار تھا کمیشن کھانا۔ دونوں خاندان شاید دنیا کا سب سے بڑا منی لانڈرنگ نیٹ ورک چلا رہے تھے۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے اپنے اثاثے ایک کروڑ پانچ لاکھ 19 ہزار بتائے تھے۔ نواز شریف اور آصف زرداری کا طریقہ واردات ایک ہی ہے۔ یہ جو سارے بول رہے تھے ان کو اپنی فکر پڑی ہوئی ہے۔ ہمارا یہ مینڈیٹ ہے کہ احتساب کرنا ہے اور چوروں کو پکڑنا ہے۔ انہوں نے اپنی لوٹ مار کو جمہوریت کا نام دیا ہوا تھا۔ جب ان پر ہاتھ ڈالا جاتا ہے تو جمہوریت خطرے میں آ جاتی ہے۔ جو تفتیش میں تعاون نہیں کررہا نیب اس کو پکڑ رہی ہے۔

 

ان کل مزید کہنا تھا کہ ہم اداروں کو آزادانہ طور پر کام کرنے دے رہے ہیں۔ ہماری حکومت کے سامنے جب حقیقت آئی تو ہوش اڑ گئے۔ نواز شریف گینگ اور زرداری گینگ نے آپس میں چارٹر آف کرپشن کیا۔ انہوں نے اپنی لوٹ مار کا نام جمہوریت رکھا ہوا ہے۔ باہر جتنی بھی کمپنیاں تھیں سب کاغذی تھیں۔ ان کو بتانا ہوگا کہ پیسے کہاں سے آئے۔

 

اس موقع پر موجود وزیر مملکت برائے خزانہ حماد اظہر کا کہنا تھا کہ ‏ہم کسی کے لیے جمہوریت کو خطرے میں نہیں ڈالیں گے۔ ‏اگر ہماری صفوں میں بھی کوئی چور نکلے گا تو ہم خود نیب کے حوالے کریں گے۔ ‏اوورسیز پاکستانی محنت کرکے پیسے ملک بھیجتے تھے یہ کمیشن کے چکر میں پیسا واپس باہر لے جاتے تھے۔ ‏جو آج ان 2 خاندانوں کی کرپشن چھپانے کے لیے سامنے آرہے ہیں ان کو شرم آنی چاہیے۔ ‏نیب اور جے آئی ٹی نے جتنی پیچیدہ ٹرانزکیشنز پر کام کیا، قابل تحسین ہے۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں