تمام سرکاری ملازمین کے اثاثوں کی تفصیلات جاننے کیلئے حکومتی اقدامات

لاہور(ادریس شیخ) جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے سرکاری ملازمین کے اثاثوں کی تفصیلات کا حکومتی منصوبہ، قانونی پہلو کیا ہونگے؟ ماہرین نے سر جوڑ لیے، ضرورت پڑنے پر قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے ذریعے قانون سازی کی جائے گی۔

 

ذرائع لیگل ٹیم کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے تمام سرکاری ملازمین کا ڈیٹا سینٹرلائز کرکے اثاثوں کی تفصیلات پر چیک رکھنے کی تجویز دی گئی ہے، جس پر قانونی ماہرین نے تجویز کے قانونی پہلوؤں پر کام شروع کر دیا، سوفٹویئر کے ذریعے ملازمین کے تمام دستیاب ڈیٹا پر نظر رکھنے کی تجویز دی گئی ہے۔

 

ذرائع کے مطابق بے ضابطگی پر ملازم کو وضاحت کا موقع دیا جائے گا، قومی شناختی کارڈ نمبر اور پراجیکٹ ٹو امپروو فنانشل رپورٹنگ اینڈ آڈیٹنگ کے ذریعے سرکاری ملازمین کے بنک اکاؤنٹس چیک کیے جانے کی بھی تجویز دی گئی تھی، بنک اکاؤنٹس میں تنخواہ کے علاوہ کسی بھی رقم کی موجودگی کا فوری طور پر نوٹس لیا جائے گا۔

 

جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے کرپشن کی روک تھام کی تجویز میں سرکاری ملازمین کے والدین، بچوں، بہن، بھائیوں اور اعزاء و اقربا کے شناختی کارڈ نمبر کے ذریعے اثاثوں کی چیکنگ کی تجویز بھی زیر غور ہے، اسٹیٹ بنک، محکمہ ایکسائز، سفری تفصیلات اور اے ٹی ایم کارڈز کی ٹرانزیکشنز کے ذریعے سرکاری ملازمین کی چیکنگ کیے جانے کی تجویز زیر غور ہے۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں