منی لانڈرنگ کیس، شریف گروپ آف کمپنیز کے افسروں سے بھی تفتیش شروع، نیب ذرائع

لاہور (پبلک نیوز) منی لانڈرنگ کیس میں نیب نے شریف گروپ آف کمپنیز کے افسروں سے بھی تفتیش شروع کر دی۔ رمضان شوگر ملز کے سیکرٹری، چیف فنانشل آفیسر، سیکرٹری چنیوٹ پاور لمیٹڈ اور شریف گروپ آف کمپنیز کے پاور ڈویژن کے بزنس ہیڈ کو تفتیش میں شامل کیا گیا ہے۔

 

نیب ذرائع کے مطابق رمضان شوگر ملز کے سیکریٹری طارق دستگیر خان، چیف فنانشل افسر محمد عثمان بھی دائرہ تفتیش میں شامل کر لیے گئے ہیں۔ شریف گروپ آف کمپنیز کے پاور ڈویژن کے بزنس ہیڈ سجاد انور اور سیکریٹری چنیوٹ پاور لمیٹڈ عابد رسول اعوان سے بھی تفتیش ہوگی۔ طارق دستگیر خان، شہباز شریف کے پرانے وفادار ہیں۔ جنہوں نے 2010 میں بطور سیکریٹری حمزہ سپننگ ملز، رمضان شوگر ملز جائیداد ضبطی کے فیصلے کو بھی چیلنج کیا تھا۔

 

نیب کا کہنا ہے کہ چیف فنانشل افسر رمضان شوگر ملز محمد عثمان منی لانڈرنگ میں براہ راست ملوث رہے اور بی نک میں رقوم جمع کرانے والے افراد کو 5000 سے 9000 کمیشن ادا کرتے رہے۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں