ایرانی وزیر خارجہ کا دورہ پاکستان، چاہ بہار منصوبہ میں شمولیت کی ایک بار پھر دعوت

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیر اعظم عمران خان، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے ملاقات کی۔ جوادظریف نے وزیراعظم عمران خان کو ایرانی صدر کا خصوصی پیغام پہنچایا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے ملاقات کی۔ جوادظریف نے عمران خان کو مبارکباد پیش کی ایرانی صدر کا خصوصی پیغام پہنچایا۔ جواد ظریف نے کہا کہ ایران پاکستان میں استحکام کا خواہش مند ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان خطہ میں مکمل امن و استحکام چاہتا ہے۔ پاک ایران تعلقات کو مزید مضبوط کریں گے۔

علاوہ ازیں ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف نے جی ایچ کیو میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی۔ آئی ایس پی آر کے مطابق ملاقات میں دو طرفہ تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر بات چیت ہوئی۔ ایرانی وزیر خارجہ نے خطہ میں تنازعات کے حل کے لیے پاکستان کے کردار کو تسلیم کیا  اور تعریف کی۔

بعد ازاں ایرانی وزیر خارجہ نے وزیر خارجہ پاکستان شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکسان یہ سمجھتا ہے پابندیاں کسی مسئلہ کا حل نہیں۔ ایران اور امریکہ کے درمیان تنازع بات چیت سے حل ہونا چاہئیے۔ جواد ظریف نے کہا کہ ایران گیس پائپ لائن منصوبے کی تکمیل کا منتظر ہے۔ ایرانی وزیر خارجہ نے پاکستان کو ایک بار پھر چاہ بہار منصوبہ میں شامل ہونے کی دعوت دے دی۔

پاک ایران وزرائےخارجہ کے درمیان توہین آمیز خاکوں کے حوالہ سے بھی گفتگو ہوئی۔ گفتگو میں اتفاق ہوا کہ مسلمانوں سمیت تمام مذاہب کے ماننے والوں کے مذہیی جذبات کا احترام کیا جانا چاہیے۔ ناموس رسالت کے تحفظ کے لیے او آئی سی کے پلیٹ فارم سے مشترکہ اور مؤثر حکمت عملی کے لیے کام کیا جائے گا۔

 

خیال رہے کہ نئی حکومت کے قیام کے بعد کسی بھی وزیر خارجہ کا یہ پہلا دورہ پاکستان ہے۔

احمد علی کیف  1 سال پہلے

متعلقہ خبریں