کیا امریکا واقعی سعودی دھمکیوں سے ڈر گیا؟

پبلک نیوز: استنبول میں سعودی صحافی کی گمشدگی سے متعلق امریکی وزیرِ خارجہ نے سعودی بادشاہ اور ولی عہد سے ملاقات کے بعد کہا کہ دونوں نے اس موضوع پر لا علمی کا اظہار کرتے ہوئے ذمہ داروں کو کٹہرے میں لانے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

تفصیلات کے مطابق 2 اکتوبر کو استنبول میں سعودی قونصل خانے سے صحافی کی گمشدگی کا معاملہ تاحال حل نہ ہو سکا۔ جمال خشوگی کے معاملے پر سعودی عرب کی امریکہ کو دھمکی کام آ گئی۔ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ریاض میں سعودی فرما نروا شاہ سلمان اور ولی عہد سے ملاقات کے بعد کہا کہ سعودی قیادت نے صحافی کی گمشدگی سے لاعلمی کا اظہار کیا ہے۔ تاہم  سعودی قیادت حقائق جاننے اور ذمہ داروں کو کٹہرے میں لانے کے لیے بھی پرعزم ہے۔

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ سعودی عرب کو ذمہ دار ٹھہرانا ایسے ہے جیسے جرم ثابت ہونے سے پہلے قصور وار ٹھہرائے جانا۔ ادھر ترک اہلکار نے امریکی نشریاتی ادارے سے گفتگو میں انکشاف کیا ہے کہ جمال کو 2 ہفتہ قبل قتل کر کے ان کی لاش کے ٹکڑے کر دیئے گئے تھے۔

حارث افضل  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں