اسلام آباد ہائیکورٹ: پیمرا کو لائسنس جاری کرنے سے روک دیا گیا

اسلام آباد (پبلک نیوز) اسلام آباد ہائی کورٹ میں نئے ٹی وی چینلز کے لائسنس کے اجراء کی سماعت ہوئی۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے پمرا کو لائسنس جاری کرنے سے روک دیا۔

 

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں نئے ٹی وی چینلز کے لائسنس کے اجراء کی سماعت ہوئی۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے پمرا کو لائسنس جاری کرنے سے روک دیا۔ نئے ٹی وی چینلز جاری کرنے سے پمرا کا حتمی فیصلہ عدالتی حکم سے مشروط ہے۔

 

چیف جسٹس اطہر من اللہ کی عدالت میں پاکستان براڈکاسٹنگ ایسوسی ایشن (پی بی اے) کی پمرا کے خلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ واضح رہے کہ پی بی اے کی جانب سے نئے چینلز کی نیلامی کو چیلنج کیا گیا ہے۔ پی بی اے کی جانب سے ایڈوکیٹ فیصل صدیقی پیش ہوئے۔

 

فیصل صدیقی نے مؤقف اختیار کیا کہ 80 چینلز کی گنجائش ہے 119 کے لائسنس  پہلے ہی جاری ہیں۔ اس حوالے سے پی بی اے نے پہلے ہی سندھ ہائیکورٹ میں اپیل دائر کر رکھی ہے۔ سندھ ہائیکورٹ نے پیمرا کو 15 دنوں میں پی بی اے کی درخواست پر فیصلہ کرنے کا حکم دیا تھا۔ پیمرا نے عدالتی احکامات کو نظر انداز کرتے ہوئے نئے چینلز کی نیلامی شروع کر دی۔ جس پر جسٹس اطہر من اللہ ریمارکس دیئے کہ اس سے کہا فرق پڑے گا۔

 

فیصل صدیقی نے موقف اختیار کیا کہ پہلے گنجائش بڑھائے جائے  پھر لائسنس جاری کیے جائیں۔ جس پر عدالت نے پمرا کو نوٹس جاری کر دیا اور سماعت 22 مئی تک ملتوی کر دی۔

حارث افضل  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں