سعودی صحافی جمال خشوگی کی لاش چار ماہ بعد بھی نہ مل سکی

پبلک نیوز: سعودی صحافی جمال خشوگی کی لاش چار ماہ بعد بھی نہ مل سکی۔ صحافی کے قتل کی تحقیقات کرنے والی اقوام متحدہ کی نمائندہ خصوصی کا کہنا ہے کہ سعودی حکام نے منصوبہ بندی کے تحت جمال خشوگی کو قتل کیا۔

اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق جمال خشوگی کے قتل کی تحقیقات کے لیے ترکی جانے والے انکوائری کمیشن نے خشوگی قتل کیس سے متعلق آڈیو ثبوت کا جائزہ لیا۔

تین رکنی مشن میں شامل اقوام متحدہ کی نمائندہ خصوصی اور ماورائے عدالت قتل کی تفتیش کی ماہر ایگینز کلیمرڈ نے کہا ہے کہ سعودی اہلکاروں نے جمال خاشقجی کو پہلے سے طے شدہ منصوبے کے تحت وحشیانہ انداز میں قتل کیا

سعودی عرب نے ترکی کی تحقیقات میں رکاوٹیں بھی ڈالیں۔ ایگنیز نے اقوام متحدہ سمیت عالمی برادری سے معاملے پر فوری توجہ دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

ادھر امریکی اخبار نیویارک ٹائمزمیں شائع رپورٹ کے مطابق امریکی انٹیلی جنس ایجنسیوں نے 2017 میں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی ان کے اعلیٰ عہدیدار سے بات چیت کا پتہ لگایا ہے،جس میں ولی عہد نے خود پر تنقید کرنے والے صحافی جمال خشوگی کو گولی مارنے کی بات کی تھی۔

واضح رہے کہ سعودی صحافی جمال خشوگی کو استنبول کے سعودی سفارتخانے میں اکتوبر میں نہایت بے رحمی سے قتل کیاگیا تھا۔

احمد علی کیف  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں