جاپان میں سیلابی تباہ کاریوں کا سلسلہ جاری،155 افراد جاں بحق سینکڑوں لاپتہ

ٹوکیو (پبلک نیوز) جاپان میں سیلاب سے تباہ کاریوں کا سلسلہ نہ تھم سکا۔ قدرتی آفت سے اب تک 155 افراد جاں بحق سینکڑوں لاپتہ ہیں۔ سیلاب سے معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا، ریلیف اور ریسکیو ٹیمیں ملبے تلے پھنسے لوگوں کی تلاش میں لگ گئیں۔
جاپان میں بدترین سیلاب نے ہر طرف تباہی مچا دی۔ راستے میں آنے والی ہر شے کو تبا ہو برباد کر دیا۔ اب تک ہونے والی بارشوں اور سیلاب سے 155 افراد ہلاک جبکہ سینکڑوں لاپتہ ہوچکے ہیں۔ دو لاکھ سے زائد افراد بے گھر ہو چکے ہیں۔ سیلاب سے معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچاہے، حکومت نے انفرسٹرکچر کو بحال کرنے کے لئے چھ کروڑ اکتیس لاکھ ڈالر کے فنڈ مختخص کر دیئے ہیں۔

جاپان کے مغربی علاقہ کراشبیکی میں کئی دنوں سے شدید بارش اور لینڈ سلائیڈنگ جاری ہے جس کی وجہ سے واقعات میں منگل تک کم از کم 155افراد ہلاک اور ہزاروں لوگ لاپتہ ہو گئے ہیں۔ بارش کی شدت میں کمی آنے سے ریلیف اور ریسکیو ٹیمیں ملبے تلے پھنسے لوگوں کی تلاش کر رہے ہیں۔

جاپان میں 1982 کے بعد یہ سب سے بڑا قدرتیو اقعہ ہوا ہے جس میں 20 ملین سے زائد لوگ متاثر ہوئے ہیں۔ وزیراعظم شنزو آبے نے اپنا غیر ملکی دورہ ملتوی کر دیا ہے۔ مرکزی کابینہ سکریٹری کے مطابق بارشوں کی وجہ سے مسٹر آبے نے بیلجیم، فرانس، سعودی عرب اور مصر کا دورہ ملتوی کر دیا۔

ذرائع کے مطابق سیلاب سے ہونے والے نقصان کا ابھی کوئی اندازہ نہیں لگایا جاسکتا. سیلاب سے مذکورہ علاقے کے متعدد تعداد میں مکانوں میں بجلی کی فراہمی متاثر ہوئی ہے اور سینکڑوں لوگوں کو پینے کا پانی نہیں مل رہا ہے۔ بارش کے بعد سیلاب سے صنعتی دنیا بھی کافی متاثر ہوئی۔

1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں