جاپان کی 200سالہ تاریخ میں پہلی بار بادشاہ نے اپنی زندگی میں تخت چھوڑ دیا

ٹوکیو (پبلک نیوز) جاپان پر تیس برس تک حکمرانی کرنے کے بعد بادشاہ اکی ہیتو تخت سے دست بردار ہو گئے ہیں۔ اب ان کے بیٹے نارو ہیتو تخت و تاج سنبھالیں گے۔

تفصیلات کے مطابق جاپان کے بادشاہ اکی ہیتو تیس برس بعد تخت سے دست بردار ہو گئے ہیں۔ اکی ہیتوکی جگہ انکے بیٹے ناروہیتو کو نیا بادشاہ مقرر کر دی اگیا۔ ٹوکیو کے شاہی محل میں ہونے والی تقریب میں وزیراعظم شنزوآبے سمیت 300 افراد نے شرکت کی۔

 

دو سو سال کے دوران اکی ہیتو پہلے بادشاہ ہیں، جو اپنا تخت خود چھوڑ رہے ہیں۔ ناروہیتو جاپان کے 126 ویں بادشاہ ہوں گے اور وہ باضابطہ طور پر نئے ‘ریوا’ عہد میں ملک کی سربراہی کریں گے، جس کے بعد رواں ‘ہیسیئی’ عہد کا خاتمہ ہو جائے گا، جو 1989 میں اکی ہیتو کے تخت نشین ہونے کے ساتھ شروع ہوا تھا۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں