جب ایک گائے کو سزائے موت سنائی گئی

صوفیہ (پبلک نیوز) انسانوں کو تو سزائے موت آپ نے سنی ہی ہو گی لیکن بلغاریہ میں ایک گائے کو موت کی سزا سنا دی گئی۔

غیر ملکی میڈیا کی جانب سے شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ بلغاریہ کی سرحد پار کرتے ہوئے ایک گائے غلطی سے ملک سربیا میں چلی گئی۔ جہاں پر دیہات کے لوگوں نے گائے کو پکڑ لیا اور اس کے ناز نکھرے اٹھانا شروع کر دیئے۔

گائے کے مالک نے بھاگ دوڑ کی اور سرحد پر پیٹرولنگ کرنے والے اہلکاروں سے درخواست کی۔ جنھوں نےمالک کی درخواست پر گائے واپس دلوا دی۔ جس سے گائے سربیا سے ایک بار پھر بلغاریہ پہنچ گئی۔

معاملہ تب خراب ہوا جب گائے کے سرحد پار کرنے سربیا جانے اور واپس بلغاریہ آنے کی خبر ملکی انتظامیہ کے کانوں تک پہنچی۔ بلغارین انتظامیہ نے گائے کے خلاف سخت قانونی ایکشن لیا اور غیر قانونی طور پر سرحد پار کرنے کی سزا سنا دی جو سزائے موت تھی۔

بلغاریہ کی انتظامیہ کی جانب سے کہا گیا کہ گائے کے پاس کے کوئی آئینی دستاویزات نہیں تھیں، لہٰذا وہ غیر قانونی طریقہ سے سرحد پار کرتے ہوئے ایک غیر یورپین ملک میں گئی جس کی سزا موت ہے۔ انتظامیہ کو اس بات کی غرض نہیں کہ وہ کون ہے۔ بس اس بات سے سروکار ہے کہ آئینی ضروریات پوری نہیں کی گئی جس کے باعث اس سنگین جرم کی سزا دی جائے گی۔

اس بات کا خیال رہے کہ سربیا یورپی یونین ممالک کی فہرست میں شامل نہیں ہے جبکہ بلغاریہ ایک پورپی یونین میں شامل ملک گنا جاتا ہے۔ بلغاریہ کے امیگریشن قوانین خاص طور پر غیر پورپین ممالک کے بہت سخت ہیں۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں