جسٹس آصف سعید کھوسہ نے 26ویں چیف جسٹس آف پاکستان کے عہدے کا حلف اُٹھا لیا

اسلام آباد(پبلک نیوز) جسٹس آصف سعید کھوسہ ملک کے 26 ویں چیف جسٹس کے عہدے کا حلف اٹھا لیا۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جسٹس آصف سعید کھوسہ سے حلف لیا۔ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے فوجداری قوانین کے ماہر ہونے کے ناطے آپ نے دو سالوں میں گیارہ ہزار سے زائد رحم کی اپیلوں کے فیصلے کیے۔

 

جسٹس آصف سعید کھوسہ پاکستان کے 26 ویں چیف جسٹس بن گئے۔ نئے چیف جسٹس کی تقریب حلف برداری ایوان صدر اسلام آباد میں ہوئی، وزیراعظم عمران خان بھی شریک تھے۔ صدر مملکت عارف علوی نے چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ سے حلف لیا۔ حلف برداری تقریب میں وفاقی کابینہ کے ارکان، تینوں مسلح افواج کے سربراہان، چیئرمین سینیٹ، اسپیکر قومی اسمبلی، سپریم کورٹ کے ججز، سینئر وکلاء اور اہم شخصیات بھی حلف برداری کی تقریب میں شریک تھیں۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ تین سو سینتالیس دن تک چیف جسٹس کےعہدے پر فائز رہنے کے بعد رواں سال بیس دسمبر کو ریٹائرد ہوں گے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کی ریٹائرمنٹ کے بعد آنے والے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ اکیس دسمبر 1954 کو ڈیرہ غازی خان میں پیدا ہوئے، جسٹس آصف سعید کھوسہ اپنی تعلیمی قابلیت اور سب سے زیادہ فیصلے تحریر کی شہرت رکھتے ہیں۔ انہوں نے 1969میں میٹرک کے امتحان میں ملتان بورڈ سے پانچویں جبکہ 1971 میں انٹرمیڈیٹ میں لاہور بورڈ سے پہلی پوزیشن حاصل کی۔ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے پنجاب یونیورسٹی سے 1975 میں ماسٹر کی ڈگری حاصل کی۔ ان کی قابلیت کی وجہ سے انہیں تین بار نیشنل ٹیلنٹ سکالرشپ سے نوازا گیا۔

 

ماسٹرز ڈگری کے بعد اعلیٰ تعلیم کے لئے انہوں نے برطانیہ کا رخ کیا اور کیمبرج یونیورسٹی سے 1977 اور 1978 میں قانون کی دو ڈگریاں حاصل کیں۔ اعلی تعلیم حاصل کرنے کے بعد وہ 1979 میں وطن واپس آئے۔ لاہور ہائی کورٹ سے وکالت کا آغاز کیا۔ 1985 میں سپریم کورٹ کے وکیل بن گئے۔ بیس سال وکالت کے بعد جسٹس آ صف سعید کھوسہ مئی اکیس 1998 میں لاہور ہائی کورٹ جبکہ 2010 میں سپریم کورٹ کے جج منتخب ہوئے۔ جسٹس آصف سعید کھوسہ فوجداری قوانین کے ماہر سمجھے جاتے ہیں ایک اندازے کے مطابق انہوں دو سال میں گیارہ ہزارہ سے زاہد رحم کی اپیلوں کے فیصلے دیئے۔

 

جسٹس آصف سعید کھوسہ چار کتابیں بھی لکھ چکے ہیں جن میں ، ہیڈنگ دی کانسٹیٹیوشن، کانسٹییوفشنل اپولوگس، ججنگ ود پیشن، اور بریکنگ نیو گراونڈ شامل ہیں۔ جسٹس آ صف سعید کھوسہ لمز یونیورسٹی ، بی زیڈ یو اور پنجاب یونیورسٹی لا کالج میں قانون پڑھانے کا وسیع تجربہ بھی رکھتے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق جسٹس کھوسہ 18 سال سے زائد عرصے میں 50 ہزار سے زاہد کیسوں کے فیصلے لکھ چکے ہیں چیف جسٹس کے عہدے پر وہ تین سو سینتالیس دن تک فائز رہنے کے بعد رواں سال بیس دسمبر کو ریٹائرد ہوں گے۔

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں